موٹروے زیادتی کیس میں سی سی پی او لاہور کے بیان پر حلیمہ سلطان کی کڑی تنقید

موٹروے پر بچوں کے سامنے خاتون کو زیادتی بنانے کے واقعہ نے جہاں دنیا بھر میں پاکستان کی بدنامی کی ہے وہیں سی سی پی او لاہور عمر شیخ کے خاتون کو ہی مورد الزام ٹھہرانے کے بیان نے بھی ہر شعبہ ہائے زندگی سے تعلق رکھنے والے لوگوں کو سیخ پا کیا ہے۔

اب مشہور ترک ڈرامہ سیریل ارطغرل غازی میں حلیمہ سلطان کا کردار ادا کرنے والی ترک اداکارہ ایسرا بلگچ نے ان کے بیان کو شرمناک قرار دیا اور کہا کہ انہیں اپنے اس طرح کے بیان پر شرم آنی چاہیے۔

انہوں نے انسٹاگرام پر سی سی پی او لاہور کے بیان کی ویڈیو شیئر کرتے ہوئے لکھا کہ ایک خاتون یا تو اکیلی سفر کر سکتی ہے یا پھر اپنے بچوں کے ساتھ مگر پولیس کا کام ان کا تحفظ اور سیکیورٹی کو یقینی بنانا ہے۔

ایسرا بلگچ نے مزید لکھا کہ اگر یہ درندے سڑکوں پر دندناتے پھریں تو ان سے آپ کو کوئی مسئلہ نہیں مگر آپ کے خیال میں اگر کوئی خاتون سڑک پر نکل آئے تو اسے زیادتی کا نشانہ بنانا یا اس کا قتل کر دینا جائز ہے؟

ترک اداکارہ نے یہ بھی کہا کہ سی سی پی او لاہور کا بیان جہالت ہے اور ان کو ایسے معاملات پر بات کرنے سے پہلے اپنے خیالات کو درست کرنے کی ضرورت ہے اور یہ بھی لکھا کہ ان کی طرح سوچنے والے لوگ کس طرح معاشرے کے لیے شرمندگی کا باعث ہیں۔

سی سی پی او لاہور عمر شیخ نے میڈیا سے گفتگو کے دوران کہا تھا کہ متاثرہ خاتون کو وقت کا خیال کرنا چاہیے تھا اور رات گئے کوئی مناسب راستہ اختیار کرنا چاہیے تھا۔ انہوں نے مزید کہا تھا کہ ان کو حیرانی ہے کہ 3 بچوں کے ہمراہ رات گئے کوئی خاتون کس طرح موٹروے پر سفر کیلئے نکل سکتی ہے۔

عمر شیخ کا کہنا تھا کہ خاتون کو موٹروے کی بجائے جی ٹی روڈ سے اسلام آباد کا سفر کرنا چاہیے تھا جو کہ عموماً موٹروے کی نسبت زیادہ آمدورفت کے باعث محفوظ ہے۔

انہوں نے یہ بھی کہا تھا کہ خاتون کو کم ازکم نکلنے سے پہلے اپنی گاڑی کا پیڑول چیک کرنا چاہیے تھا۔

 

سی سی پی او لاہور کے رویے کی بہت سی شکایات ہیں کہ گزشتہ روز بھی ان کے رویے اور گالم گلوچ سے تنگ آ کر ایک سب انسپکٹر فہد افتخار ورک نے استعفیٰ دے دیا۔

اطلاعات کے مطابق سی سی پی او لاہور نے اس سب انسپکٹر کو ایک میٹنگ کے دوران چند انگریزی کے الفاظ بولنے پر گالیاں دیں اور مقدمے کی بھی دھمکی دی۔ جس کے نتیجے میں پڑھے لکھے نوجوان نے اس تضحیک آمیز رویے پر احتجاجاً استعفیٰ دے دیا۔


  • Featured Content⭐


    24 گھنٹوں کے دوران 🔥


    From Our Blogs in last 24 hours 🔥


    >