پی آئی اے طیارہ حادثے میں معجزانہ طور پر بچ جانیوالے ظفرمسعود کا پہلا ہوائی سفر

پی آئی اے طیارے حادثے میں زندہ بچ جانےوالےظفرمسعود کا پہلا ہوائی سفر

مئی 2020 میں کراچی میں پی آئی اے طيارےحادثےميں معجزانہ طورپربچ جانے والے مسافرظفرمسعود نے حادثے کے بعد پہلا فضائی سفرکرلیا۔

پی کے 8303 کے زندہ بچ جانے والے مسافر نے ٹوئٹر پیغام میں قومی ايئرلائن کيلئے نيک خواہشات کااظہار کيا اور لکھا کہ ہمیں پی آئی اے کوسپورٹ کرنا چاہئے،پی آئی اے کی بحالی اوربہتری کيلئے کام کرناہے،

انکا مزید کہنا تھا کہ میری خواہش ہےکہ پی آئی اے کی ہرممکن سپورٹ کروں تاکہ ایئرلائن کی بحالی ہوسکے اور پہلے جیسے اپنے نام کو بلند کرے، یہ بہت اہم ہے کہ ہم اپنے قومی اثاثے پر بھروسہ کریں اور اس لئے فضائی سفر کا خوف ختم کرنا ہوگا۔

حادثے کے بعد پہلے فضائی سفر میں ظفرمسعود 4 مہینے بعد پی کے304سےلاہورروانہ ہوئے تھے،ظفر مسعود کاکراچی میں پی آئی اے انتظامیہ اورلاہور میں سی ای او پی آئی اے نے استقبال کیا تھا۔

خیال رہے کہ 22 مئی کو لاہور سے کراچی آنے والے پی آئی اے کے طیارے کو حادثہ پیش آیا تھا۔ حادثے میں 97 افرادجاں بحق جبکہ دو مسافر معجزانہ طور پر بچ گئے تھے.

قومی ایئرلائن پی آئی اے کا مسافر طیارہ کراچی میں لینڈنگ سے کچھ دیر قبل رہائشی علاقے ماڈل کالونی میں گر کر تباہ ہوگیا تھا۔ پی آئی اے کی پرواز پی کے 8303 میں 99 مسافر اور عملے کے 8 ارکان سوار تھے۔ پی آئی اے کے طیارے نے حادثے سے ایک گھنٹہ30 منٹ قبل لاہور ایئر پورٹ سے اڑان بھری تھی اور کراچی ائیر پورٹ پر لینڈنگ سے کچھ دیر پہلے گر کر تباہ ہوگیا تھا۔

حادثے سے قبل طیارے کے کپتان نے ایئر ٹریفک کنٹرول کو مے ڈے کال میں طیارے کے انجن خراب ہو نے کی اطلاع دی تھی۔

واضح رہے کہ پی آئی اے طیارہ حادثے میں زندہ بچ جانے والے ظفر مسعود پنجاب بینک کے چیف ایگزیکٹو ہیں اور پاکستان ٹی وی اور فلم انڈسٹری کے معروف اداکار منور سعید کے صاحبزادے ہیں۔


  • Featured Content⭐


    24 گھنٹوں کے دوران 🔥


    From Our Blogs in last 24 hours 🔥


    >