تحریک انصاف کا مقامی رہنما پولیس حراست میں جاں بحق

پنڈادنخان کے علاقے جالپ میں گزشتہ 2 ماہ کے دوران ڈکیتی کی وارداتوں میں ہوشربا اضافہ ہوا جس پر پولیس کے ناکافی اقدامات کے خلاف پنڈی سید پور میں پولیس کے خلاف احتجاج جاری تھا۔ اس احتجاج کی سربراہی پی ٹی آئی کے رہنما سابق سٹی ناظم طاہر آصف چودھری کر رہے تھے کہ انہیں احتجاجی مظاہرین کے درمیان سے پولیس نے گرفتار کر لیا۔

پولیس احتجاجی مظاہرے سے پی ٹی آئی رہنما کو گرفتار کر کے نکلی ہی تھی کہ کچھ دیر بعد ان کے انتقال کی خبر آ گئی۔ پولیس نے جان چھڑانے کے لیے فوری طور پر لاش کو بی ایچ یو جلالپور شریف منتقل کر دیا۔

ہسپتال میں موجود ڈاکٹر کے مطابق طاہر آصف چودھری کو مردہ حالت میں ہسپتال لایا گیا جبکہ پولیس کا کہنا ہے کہ ان کی موت ہسپتال پہنچ کر ہوئی۔

ادھر متوفی کے بھائی شاہد آصف چودھری نے ویڈیو بیان جاری کیا جس میں انہوں نے الزام عائد کیا ہے کہ ان کے بھائی کے قتل میں ڈی ایس پی اور ایس ایچ او پنڈ دادنخان، ایس ایچ او جلالپور شریف، وفاقی وزیر سائنس و ٹیكنالوجی فواد چودھری اور فیصل فرید شامل ہیں۔

شاہد آصف چوہدری نے کہا کہ علاقے میں چوری ڈکیٹیاں ہورہی تھیں، میرا بھائی اس پر احتجاج کررہا تھا کہ پولیس نے اس پر تشدد کیا۔

جبکہ ڈی پی او جہلم شاکر حسین کا کہنا تھا کہ طاہر آصف چودھری مظاہرہ کررہے تھے ،انہوں نے سڑک بلاک کررکھی تھی پولیس سڑک کھلوانے کیلئے ان سے مذاکرات کررہی تھی کہ اس دوران انکی طبعیت خراب ہوگئی جس پر انہیں فوری طور پر ہسپتال پہنچایا گیا لیکن وہ جانبر نہ ہوسکے۔


  • Featured Content⭐


    24 گھنٹوں کے دوران 🔥


    From Our Blogs in last 24 hours 🔥


    >