موٹروے زیادتی کیس: متاثرہ خاتون ملزمان کو شناخت کرنے اور بیان دینے پر رضامند

9 ستمبر کو لاہور کے علاقے گجر پورہ میں موٹر وے پر خاتون کو اجتماعی زیادتی کا نشانہ بنانے کا واقعہ پیش آیا۔ دو افراد نے موٹر وے پر کھڑی گاڑی کا شیشہ توڑ کر خاتون اور اس کے بچوں کو نکالا، موٹر وے کے گرد لگی جالی کاٹ کر سب کو قریبی جھاڑیوں میں لے گئے اور پھر خاتون کو بچوں کے سامنے زیادتی کا نشانہ بنایا۔

خاتون رات کو تقریباً ڈیڑھ بجے اپنی کار میں 2 بچوں کے ہمراہ لاہور سے گوجرانوالہ واپس جا رہی تھی کہ رنگ روڈ پر گجر پورہ کے نزدیک اسکی کار کا پیٹرول ختم ہو گیا۔ کار کا پٹرول ختم ہونے کے باعث موٹروے پر گاڑی روک کر خاتون مدد کا انتظار کر رہی تھی۔

خاتون نے موٹروے پولیس کو بھی فون کیا مگر موٹر وے پولیس نے مبینہ طور پر کہا کہ کوئی ایمرجنسی ڈیوٹی پر نہیں ہے۔ پولیس کے مطابق زیادتی کا شکار خاتون کے میڈیکل ٹیسٹ میں خاتون سے زیادتی ثابت ہوئی ہے۔

پولیس کے مطابق متاثرہ خاتون ابتدائی بیان بذریعہ ٹیلی فون ریکارڈ کرائیں گی جس کے بعد ان کے 161 کے بیان کا ٹرانسکرپٹ چالان کےساتھ لف کیاجائے گا۔ متاثرہ خاتون ملزم شفقت کو شناخت کرنے پر بھی رضا مند ہو گئی ہیں۔

اس کیس میں عدالت سے اِن کیمرہ ٹرائل کی درخواست کی جائے گی اور دوران ٹرائل متاثرہ خاتون کا ’فرضی نام‘ استعمال کیا جائے گا۔


  • Featured Content⭐


    24 گھنٹوں کے دوران 🔥


    From Our Blogs in last 24 hours 🔥


    >