کراچی: نمازی کا دوران نماز مسجد کے پیش امام پر قاتلانہ حملہ ، ویڈیو منظرعام پر

کراچی کے علاقے شاہ فیصل کالونی نمبر ایک ریتا پلاٹ جامع مسجد طیبہ میں توار کی شام تقریبا 6 بج کر 45 منٹ پر مرد و خواتین مسجد میں نماز کی ادائیگی کے بعد سنتیں پڑھ رہے تھے کہ اسی دوران ایک نمازی نے شیو کرنے والے بلیڈ سے پیش امام مولانا عبد الصمد خان پر حملہ کرے کے ان کو بری طرح سے زخمی کر دیا۔

مسجد میں موجود نمازیوں نے پیش امام پر قاتلانہ حملہ کر کے زخمی کرنے والے ملزم کو پکڑ کر تشدد کا نشانہ بنایا جب کہ مسجد میں نماز ادا کرنے والی خواتین کی جانب سے بھی پیش امام پر حملہ کرنے والے حملہ آور پر تشدد کیا گیا اور اسے مار مار کر لہو لہان کر دیا۔

پولیس کا اس حوالے سے کہنا تھا کہ حملہ آور کے حملے میں پیش امام کی گردن پر کٹ لگا ہے، واقعے کی اطلاع ملنے پر شاہ فیصل پولیس اسٹیشن کی پولیس کی بھاری نفری کے مسجد پہنچی جہاں انہوں نے جدوجہد کے بعد امام پر حملہ کرنے والے حملہ آور کو نمازیوں کے چنگل سے چھڑا کر تھانے منتقل کیا۔

پولیس کے مطابق مسجد کے پیش امام پر حملہ کرنے والا حملہ اور پاک آرمی کا ریٹائرڈ ملازم ہے، 52 سالہ توقیر قریشی نے اپنا شناختی کارڈ سروس کارڈ بھی پولیس کے حوالے کر دیا ہے اور وہ شاہ فیصل کالونی نمبر 5 کا رہائشی ہے اور دو بیٹوں کا باپ ہے، اہلیہ کے انتقال کر جانے کے بعد سے توقیر قریشی دن رات مسجد میں ہی گزارتا تھا۔

پولیس نے قاتلانہ حملے میں زخمی ہونے والے پیش امام کے بیان کے بعد ان کی مدعیت میں ملزم توقیر قریشی کے خلاف مقدمہ درج کرکے اسے تفتیشی حکام کے حوالے کر دیا ہے۔پولیس اس حملے کوہرزاویے سے دیکھ رہی ہےکہ کیا یہ ذاتی لڑائی کا شاخصانہ ہے یا فرقہ واریت کے نام پرغیرملکی سازش ہے


Featured Content⭐


24 گھنٹوں کے دوران 🔥


From Our Blogs in last 24 hours 🔥


>