پاکستان میں غلام بن کر نہیں رہ سکتا،ظلم کے خلاف کھڑا ہونے کا فیصلہ کرلیا ہے،نواز شریف

لاہور میں سابق وزیراعظم نواز شریف کی زیر صدارت مسلم لیگ ن کی سنٹرل ایگزیکٹو کمیٹی کا اجلاس ہوا، سنٹرل ایگزیکٹیو کمیٹی کے اجلاس میں مریم نواز، احسن اقبال، شاہد خاقان، محمد زبیر، راجہ فاروق شریک ہوئے، سی ای سی کے اجلاس میں شہباز شریف کی گرفتاری کے بعد پیدا ہونے والی صورتحال، مستقبل کے لائحہ عمل سمیت سیاسی حکمت عملی پر مشاورت کی گئی۔

نواز شریف کا لندن سے ویڈیو لنک کے ذریعے سنٹرل ایگزیکٹو کمیٹی کے اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے کہنا تھا کہ آج ہم لوگ انگریزوں کی غلامی سے نکل کر اپنوں کی غلامی میں آگئے ہیں، خود سے پوچھیے کہ کیا آپ لوگ آزاد ہیں؟ ہم آزاد شہری نہیں ہیں، وہ وقت دور نہیں ہے جب تمام چیزوں کا حساب دینا ہوگا۔

اگر قوم نے ظلم اور زیادتیوں کے خلاف کھڑا ہونا سیکھ لیا تو تبدیلی سالوں میں نہیں بلکہ چند دنوں میں آ جائے گی، اسی لئے دو ٹوک فیصلہ کیا ہے کہ ملک میں غلام نہیں بلکہ پاکستانی بن کر رہنا چاہتے ہیں۔

سابق وزیراعظم کا کہنا تھا کہ جو ادارے  عمران خان کو لے کر آئے ہیں انہیں پچھتاوا تو ہو رہا ہوگا کیونکہ اس بندے کا ذہن خالی ہے، یہ بندہ تو قصور وار ہے ہی لیکن اسے لانے والے بھی برابر کے قصوروار ہیں اور اب انہیں جوابدہ ہونا پڑے گا۔

روزانہ کی بنیادوں پر پارٹی کی نگرانی کے لیے دستیاب ہوں گا اور جو کام مجھے سونپا جائے گا اسے پورا کروں گا، اب میں آپ لوگوں کی مشاورت کا منتظر ہوں کہ ان مقاصد کے حصول کے لئے کیا حکمت عملی اپنانی چاہیے؟

ویڈیو لنک کے ذریعے اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے نواز شریف نے کہا کہ آج پارلیمنٹ کو ربڑ سٹیمپ بنا کر رکھ دیا گیا ہے، میں آپ لوگوں سے پوچھنا چاہتا ہوں کہ آپ لوگ پارلیمنٹ میں کس حد تک خود مختار ہیں؟ مجھے کچھ لوگوں سے پتہ چلا ہے کہ پارلیمنٹ پارلیمنٹیرین نہیں بلکہ کوئی اور چلا رہا ہے، دوسرے لوگ  پارلیمنٹ میں آ کر بتاتے ہیں کہ آج پارلیمنٹ کا ایجنڈا کیا ہو گا۔

نواز شریف کا اپنے خطاب میں اپنے بھائی شہباز شریف کی گرفتاری پر دکھ اور افسوس کا اظہار کرتے ہوئے کہنا تھا کہ اپنے بھائی شہباز شریف کی گرفتاری پر دکھی ہوں، جیسا ہمارے بچوں کے ساتھ سلوک روا رکھا جا رہا ہے تاریخ میں کبھی بھی ایسا  رویہ اختیار نہیں کیا گیا، جو کچھ بھی ہمارے ساتھ کیا جا رہا ہے اس سے ہمارے جذبے مزید بلند ہونگے اور جدوجہد تیز ہوگی۔

انہوں نے کہا کہ شہباز شریف جس قدر بہادری اور استقلال کے ساتھ حکومت کی زیادتیوں اور نا انصافیوں کا سامنا کر رہے ہیں وہ مردِ میدان ہیں، ہمارے بیانیے کو تقویت دیتے ہوئے کبھی بھی انہوں نے سر نہیں جھکایا، انہوں نے وفاداری  اور نظریاتی وابستگی کی مثال قائم کر دی ہے۔ دیانتداری سے ملک اور قوم کی خدمت کرنے پر میں شہبازشریف کو سلیوٹ پیش کرتا ہوں۔

  • بھڑوے تم یہاں ( پاکستان ) رہ کہاں رہے ہو ؟
    تم وہاں لندن میں تمہارے بچے وہاں تمھارے
    بھائی اور ایک بیٹا ( حمزہ ککڑی ) چوری
    کے جرم میں جیل میں اندر — باقی بیٹے داماد
    اور بیٹیاں مفرور
    تم بھی یہاں آؤ — تمہیں بھی جیل میں کریں

  • tou haramkhor bhagorey waapis aao na. Ganjey khanzeer ki aulaad liar jhoot aur fareb kr k bhaag keyun gaye lootrey. tum tou ek laanti insaan ho lohar ki aulaad. Kambakht kisi ko dekh ker he kuch seekh lo. Look what happened to Sadaam, Ghadafi , Shah of Iran khanzeer mulk ko loot ker bhaag gaye ho. Itney he muhabet e watan ho tou karo illaan k sub looti hoe daulat wapis ker raha hoon. Kub tuk jeeo gy akher merna hy tum ko ek din aur Allah(swt) ko kya jawaab dou gy budbakht kuch akher he sanwaar lo iss umer mein.

  • صاف بولو چار دن جیل سے پھٹ کر ہاتھ میں آگئ ۔گیارہ سال کہاں سے کاٹتے۔
    فکر نہیں کرو اب لندن میں گانڈ مروانا۔ پاکستان میں اتنے جوتے پڑیں گے کہ ساری سیاست بچھواڑے سے نکل جائے گی۔
    اب دیکھتے کتنے بھڑوے پٹواری
    مودی کے یار اور را کے ایجنٹ لوہار اور اس کی بدچلن لڑکی کو ڈیفینڈ کرتے ہیں ۔

  • الطاف حسین کو استعمال کیا پھر کنڈم کی طرح پھینک دیا۔ اب حاضر ہے نواز بھائی۔ انکی سیاست بھی برطانیہ سے چلے گی


  • Featured Content⭐


    24 گھنٹوں کے دوران 🔥


    From Our Blogs in last 24 hours 🔥


    >