”نو عمر لڑکیوں میں سوفٹ ڈرنکس اور تمباکو نوشی کا بڑھتا رجحان تشویشناک ہے“

وزیر مملکت برائے موسمیاتی تبدیلی زرتاج گل کا پاکستان نیشنل ہارٹ ایسوسی ایشن کے زیر اہتمام امراض قلب کی روک تھام میں خواتین کے کردار پر سیمینار سے خطاب میں کہنا تھا کہ اکتوبر کا مہینہ پوری دنیا میں کینسر سے آگاہی کے طور پر منایا جاتا ہے۔

وزیر مملکت نے کہا کہ ہمیں بتایا گیا ہے کہ جو لوگ روزانہ کی بنیاد پر سوفٹ ڈرنکس کو بلا خوف و خطر استعمال کرتے ہیں، ان میں کینسر کے 18 فیصد جبکہ دل کے دورے کے 42 فیصد خدشات بڑھ جاتے ہیں، جو کہ تشویشناک امر ہے۔

زرتاج گل نے کہا کہ ہماری حکومت کی خواہش ہے کہ ہم اپنا درآمدی بل کم کریں تاکہ ملک میں جو بھی چیز آئے وہ حلال ہو، ہم درآمدات کم کرکے برآمدات بڑھانا چاہتے ہیں، تاہم آپ لوگ قانون سازی پر جو بھی تجاویز پیش کریں گے ہم اس پر عمل درآمد کروانے میں آپ کی ہر ممکن مدد کریں گے۔

وفاقی پارلیمانی سیکرٹری برائے صحت ڈاکٹر نوشین حامد کا اس موقع پر خطاب کرتے ہوئے کہنا تھا کہ دل کے امراض سے بچنے کے لیے خواتین کو چاہئے کہ وہ چکنائی والی چیزیں بہت کم استعمال کریں تاکہ خواتین میں دل کی بیماریوں کی شرح میں بڑھتے ہوئے اضافے پر قابو پایا جا سکے۔

ڈاکٹر نوشین حامد نے کہا کہ جو بچیاں نو عمری میں کالج کے دنوں میں تمباکو نوشی شروع کر دیتی ہیں اور اس کی عادی ہو جاتی ہیں تو شادی کے بعد بھی ہو تمباکو نوشی کرتی ہیں جس کی وجہ سے ان کی شادیاں قائم نہیں رہ پاتیں ٹوٹ جاتی ہیں، ہمیں بیماریوں سے نجات دلانے والے پہلوؤں پر توجہ مرکوز کرنی چاہیے۔


Featured Content⭐


24 گھنٹوں کے دوران 🔥


From Our Blogs in last 24 hours 🔥


>