پاکستانی ٹیکسی ڈرائیور کا انوکھا کارنامہ، 10 عالمی زبانوں پر عبور حاصل کر لیا

پشاور کے رہائشی 33 سالہ حسین سید نے دبئی میں ڈرائیونگ کے دوران دنیا کی 10 زبانیں سیکھ کر سب کو حیران کر دیا،دبئی میں پاکستانی ٹیکسی ڈرائیور حسین سید نے تمام زبانیں گوگل ٹرانسلیٹر اور دیگر ایپلی کیشنز سے سیکھی ہیں۔

خبر رساں ادارے کی رپورٹ کے مطابق 33 سالہ حسین سید کا ڈاکٹر بننے کا خواب تھا، لیکن دیگر وجوہات کی وجہ سے ان کا یہ خواب پورا نہ ہوسکا، لیکن انہوں نے اپنی صلاحیت کا استعمال کرتے ہوئے بنا کسی انسانی مدد کے دنیا کی دس زبانوں پر عبور حاصل کرلیا۔

دبئی سے چھٹیوں کے دوران پاکستان آنے پر بھی حسین سید کا زیادہ تر دھیان دنیا کی مختلف زبانیں سیکھنے پر مرکوز رہتا ہے، حسین سید کا اگلا ہدف سپینش، اٹیلین اور فرینچ زبان سیکھنا ہے، جنہیں سیکھنے کے لیے وہ دن رات محنت کر رہے ہیں۔

حسین سید کا نجی ٹی وی کے پروگرام میں گفتگو کرتے ہوئے کہنا تھا کہ مجموعی طور پر کئی زبانیں بول سکتے ہیں لیکن ملک سے باہر انہیں سات مختلف زبانوں پر عبور حاصل ہے، جن میں عربی، فارسی ، رشین، چائینیز، ملی عالم ، انگلش اور تغالک  شامل ہے۔

حسین سید کا کہنا تھا کہ جب وہ 16 سال کی عمر میں دوبئی آئے تو انہوں نے پانچ سال تک چوکیدار کی نوکری کی، اس پانچ سالہ عرصے کے دوران انھوں نے اپنے ساتھ کام کرنے والے دیگر لوگوں سے ان کی زبانوں کے سب سے زیادہ بولے جانے والے جملے اور الفاظ سیکھے۔ جنہیں آج وہ کسی رکاوٹ کے بغیر باآسانی بول اور سمجھ لیتے ہیں۔


  • Featured Content⭐


    24 گھنٹوں کے دوران 🔥


    From Our Blogs in last 24 hours 🔥


    >