نوازشریف سمیت ن لیگ کے کسی لیڈرنے کشمیر اور کلبھوشن پر بات نہیں کی، اعتزازاحسن

نوازشریف سمیت ن لیگ کے کسی لیڈرنے کشمیر اور کلبھوشن پر بات نہیں کی، اعتزازاحسن

نواز شریف وعدے کی پاسداری نہیں کرتے، ماضی سے مایوس ہوں، اعتزاز احسن

معروف قانون دان اور سینئر رہنما اعتزاز احسن نے نجی ٹی وی سے گفتگو میں کہا کہ میں میاں صاحب کے ماضی سے بہت مایوس ہوں، یہ وہ ہی میاں صاحب ہیں جو انیس سو پچیاسی میں ضیا الحق اسمبلی کے وزیراعلیٰ بنے ہوئے تھے،دیکھنا یہ ہے کہ نوازشریف اپنے بیانیے پر قائم رہتے ہیں یا نہیں۔

اعتزازاحسن نے کہاکہ یہ وہی نوازشریف ہیں جو ضیا الحق کے دور میں وزیر اعلیٰ بنے تھے یہ وہی میاں صاحب ہیں جو انیس سو اٹھاسی کے انتخابات ہوئے تو  ہمارے ایم پی اے اٹھاتے رہے، اور کوشش کرتے رہے کہ بی بی شہید کی چھیانوے اور نواز شریف کی چورانوے نشستیں تھیں، پھر بھی وزیراعظم نامزد کردیئے جائیں،جب آپ آرمی چیف اور صدر کے ساتھ مل کر وزیراعلیٰ پنجاب ہوگئے، ڈی جی آئی ایس آئی کے ساتھ مل کر ہماری حکومت کے خلاف سازشیں کرتے رہے، عدم اعتماد کی تحریک بھی ہمارے خلاف چلائی،ہمارے ایم این نے چوہدری خورشید کو اغوا کیا۔

اعتزازاحسن کا کہنا تھا کہ اس وقت پنجاب پولیس جب چاہے جہاں چاہے ہمارے بندے اٹھا کر لے جائے، میاں صاحب نے آئی جے آئی بنا کر انیس سو نوے کا الیکشن لڑا،میاں صاحب نے سترہ اپریل انیس سو ترانوے کواعلان کیا کہ میں کبھی ڈکٹیشن نہیں لوں گا، اور اٹھارہ جولائی کو میاں صاحب نے وحید کاکڑ کے ہاتھ اپنا استعفی دے دیا۔

انیس سو ننانوے کو قید ہوئے تو پرویز مشرف کے ساتھ دس سال سیاست سے مکمل کنارہ کشی کرلی، پرویز مشرف سے سیاست سے کنارہ کشی کا معاہدہ کیا، نواز شریف اپنے ہر وعدے سے مکرتے گئے، نواز شریف آج تک بیساکھیوں کے سر پر اقتدار میں آتے رہے۔

اعتزاز احسن نے عمران خان کی جانب سے نواز شریف کیلئے نازیباں زبان پر کہا کہ انہیں ایسی باتیں نہیں کرنی چاہئے، سیاست میں ایسا اچھا نہیں لگتا، شائستہ زبان استعمال کرنی چاہئے،میاں نواز شریف نے بی بی شہید کو بھی بہت برا بھلا کہا۔

اعتزاز احسن نے کہا کہ گوجرانوالہ جلسے میں احسن اقبال، شاہد خاقان عباسی، خواجہ آصف، جاوید ہاشمی ، نوازشریف، مریم نواز سب نے تقاریر کیں مگر بلاول بھٹو زرداری نے ہی کشمیر پر بات کی۔ن لیگ کے کسی لیڈر نے کشمیر پر بات نہیں کی۔پاک فوج کے شہدا کا ذکر جلسے میں ہوناچاہئے تھا،ذکر نہ ہونے پر افسوس ہوا۔یہ ہمار ے شہدا ہیں،جس عقیدے کے ساتھ بلاول بھٹو نے کشمیر کی بات کی،میری مایوسی ختم ہوگئی ورنہ پہلے تو میں مایوس تھا کہ کسی لیڈر نے ذکر تک نہیں کیا۔ نوازشریف کو گیدڑکہنے کی رائے سے اتفاق نہیں کرتا۔

اعتزاز احسن نے کہا کہ نوازشریف بہت جلد بھول جاتے ہیں قمر جاوید باجوہ کو لگایا کس نے تھا،یہ خود آرمی چیف کو منتخب کرتے ہیں،مشرف تین پوزیشن جونیئر تھا مگر صرف اس لئے منتخب کیا کہ وہ اردو بولنے والے پاکستانیوں میں سے تھا۔انہوں نے سوچا کہ یہ اردو بولنے والا ہے یہ ہمارا کیا بگاڑ لے گا۔اس کا تو حلقہ اثر فوج میں ہوگا ہی نہیں۔

بلاول بھٹو کے بعد مولانا فضل الرحمان خطاب کے لئے آئے ورنہ وہ بھی کشميرپربات نہ کرتے۔ انھوں نے مطالبہ کیا کہ 20سال مولاناچيئرمين کشميرکميٹی رہے کياوہ ريکارڈدکھاسکتےہيں؟ نواز شریف کشمیر پر بات  ہی نہیں کرتے۔


  • Featured Content⭐


    24 گھنٹوں کے دوران 🔥


    From Our Blogs in last 24 hours 🔥


    >