کیپٹن صفدر گرفتاری:سندھ حکومت کی باہر وضاحتیں،عدالت میں ضمانت کی مخالفت

 کیپٹن صفدر گرفتاری:سندھ حکومت کی باہر وضاحتیں،عدالت میں ضمانت کی مخالفت

گزشتہ روز مزار قائد کے تقدس کی پامالی کے کیس میں کیپٹن ریٹائرڈ صفدر کی گرفتاری کے موقع پر سندھ حکومت کا دہرا معیار سامنے آگیا ہے، سندھ حکومت کے پراسیکیوٹر کی جانب سے عدالت کے اندر کیپٹن ریٹائرڈ صفدر کی ضمانت کی مخالفت کی گئی جب کہ عدالت کے باہر میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے سندھ حکومت کی جانب سے مذمت کی گئی۔

خبر رساں ادارے کی رپورٹ کے مطابق کمرہ عدالت میں کیپٹن ریٹائرڈ صفدر کی ضمانت کی سندھ حکومت کے پراسیکیوٹر کی جانب سے مخالفت کی گئی جبکہ اسسٹنٹ اٹارنی جنرل نے بھی مریم نواز کے شوہر کیپٹن ریٹائرڈ صفدر کی ضمانت کی مخالفت کی، علاوہ ازیں ضمانت پر رہا ہونے والے کیپٹن (ر) صفدر نے میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ بیرونی ایجنٹوں پر کام کرنے والوں کا راستہ روکیں گے۔

عدالت کے باہر میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے کیپٹن ریٹائرڈ صفدر کا کہنا تھا کہ مجھے یہ الزام لگا کر گرفتار کیا گیا کہ مزار قائد کے احاطے میں مادر ملت زندہ باد کے نعرے کیوں لگائے؟ مادر ملت کی بجائے کیا ایوب اور مشرف زندہ باد کے نعرے لگاتے۔

کیپٹن (ر) صفدر نے کہا کہ ہم نے قانون اور آئین کے آگے سرتسلیم خم کیا اور گرفتاری دی، نواز شریف کا پیغام آئین اور جمہوریت کے دفاع کے لیے ہے، عدالت سے ضمانت ملنے پر میں سندھ حکومت اور وکلاء برادری کا تہہ دل سے شکریہ ادا کرتا ہوں۔


  • Featured Content⭐


    24 گھنٹوں کے دوران 🔥


    From Our Blogs in last 24 hours 🔥


    >