وزیراعظم عمران خان کا غیر ضروری ود ہولڈنگ ختم کرنے کی خواہش کا اظہار

وزیراعظم عمران خان کا غیر ضروری ود ہولڈنگ ختم کرنے کی خواہش کا اظہار

پی ایم ہاؤس میں قومی رابطہ کمیٹی برائے ہاؤسنگ، تعمیرات و ڈویلپمنٹ کے اجلاس کی صدارت کرتے ہوئے وزیراعظم کا کہنا تھا کہ صوبوں کو آن لائن پورٹل کا بھر پور استعمال کرنا چاہیے تا کہ منظوری کے عمل کو شفاف اور تیز بنایا جائے۔

وزیراعظم نے صوبوں کو ہدایات دی ہیں کہ عام آدمی کو رہائش کے لیے قرضوں کے حصول میں زیادہ سے زیادہ سہولت فراہم کی جائے اور ساتھ ہی ملک میں صنعتی شعبے کو رعایت دینے اور مزید ریونیو پیدا کرنے کے لیے ٹیکس نظام میں تبدیلیوں کی ضرورت پر زور دیا۔

اجلاس میں گورنر اسٹیٹ بینک رضا باقر نے وزیراعظم کوغریب اور متوسط طبقے کے لیے آسان اقساط پر قرضوں کی فراہمی کے حوالے سے بریفنگ دی۔ نیشنل بینک، الائیڈ بینک، میزان بینک، بینک الحبیب، حبیب بینک اور بینک آف پنجاب کے سربراہان نے وزیر اعظم کو نیا پاکستان ہاؤسنگ پروگرام کے تحت قرضوں کی فراہمی کے بارے میں آگاہ کیا اور کہا کہ اسلامی اور روایتی بینکوں کے تحت قرضوں کی حصولی کا عمل آسان بنایا گیا ہے اور اس ضمن میں برانچز میں خصوصی ڈیسک بھی بنائے گئے ہیں۔

اجلاس کو آگاہ کیا گیا کہ قرضوں کی فراہمی کے عمل کو مختصر بنانے کے لیے ٹیکنالوجی کا استعمال کیا جا رہا ہے تاکہ قرضہ لینے والے افراد کے کوائف کی تصدیق جلد اور تیزی سے ہو سکے۔

چیف سیکریٹری پنجاب جواد رفیق نے اجلاس کو بتایا کہ تعمیرات اور بلڈرز کے لیے آن لائن پورٹل متعارف کروایا جا چکا ہے جس پراب تک 6 ہزار 994 درخواستیں موصول ہوئی اور ان میں سے 54 فیصد کی منظوری دی جا چکی ہے۔

ٹیکس نظام کی بہتری کے لیے وزیراعظم عمران خان نے کہا کہ فیڈرل بورڈ آف ریونیو(ایف بی آر) کی تجدید حکومت کی اولین ترجیح ہے کیوں کہ ملک کی معیشت میں استحکام کے لیے ٹیکس بیس کو وسعت دینا انتہائی اہم ہے۔ انہوں نے ایف بی آر اور نظام ٹیکس میں ٹیکنالوجی متعارف کروانے کی ہدایت کی تا کہ نظام میں شفافیت کو یقینی بنایا جاسکے۔

ٹیکس گزاروں پرعائد مختلف ٹیکسوں پر بات کرتے ہوئے وزیرِاعظم نے کہا کہ غیر ضروری ودہولڈنگ ٹیکسز کے خاتمے پر خصوصی توجہ دی جانی چاہیئے۔ نظام ٹیکس بالخصوص چھوٹے اور درمیانے درجے کے کاروبار کے لیے ٹیکس ریٹرنز اور ٹیکس کے نظام کو آسان بنایا جائے۔

پاکستان کے معروف برآمد کنندگان کے ایک وفد سے ملاقات کرتے ہوئے وزیراعظم نے انہیں یقین دہانی کروائی کہ برآمد کنندگان کے لیے زیادہ سے زیادہ آسانیاں اور سہولتوں کے اجلاس کے دوران ان کی پیش کردہ ہر تجویز پر غور کیا جائے گا۔
اجلاس میں پاکستان آئی لینڈز اور راوی ریور فرنٹ اربن ڈیولپمنٹ منصوبوں کی پیشرفت کا جائزہ لیا گیا۔ وزیراعظم نے امید ظاہر کی کہ ان منصوبوں سے ملک میں بھاری سرمایہ کاری آئے گی اور مقامی لوگوں کے لیے روزگار کے مواقع پیدا ہوں گے۔


Featured Content⭐


24 گھنٹوں کے دوران 🔥


From Our Blogs in last 24 hours 🔥


>