ریسکیو 1122 میں ڈھائی ارب کی کرپشن، تحقیقات میں نیا موڑ آگیا

ریسکیو1122 میں اڑھائی ارب روپے سے زائد کرپشن کا انکشاف۔۔۔ ریسکیو1122 کے ڈی جی رضوان نصیر اور دیگر افسران مشکل میں۔

ریسکیو 1122 سروس میں مبینہ طور پر ڈھائی ارب سے زائد کی کرپشن میں محکمہ اینٹی کرپشن نے ریسکیو 1122 کے ڈائریکٹر جنرل سمیت دیگر افسران کو26 اکتوبر کو طلب کرلیا ہے۔

خبررساں ادارے کی رپورٹ کے مطابق ریسکیو 1122 میں مبینہ طور پر 2 ارب 57 کروڑ کی کرپشن پر محکمہ اینٹی کرپشن تحقیقات کررہا ہے، تحقیقات کے عمل کو 6 حصوں میں تقسیم کیا گیا ہے۔

ذرائع کے مطابق ریسکیو 1122 کے حکام کی جانب سے پرنٹنگ کے ٹھیکوں سے من پسندافراد کو نوازنے، جعلی اور بوگس کمپنیوں کے ذریعے ادویات کی خریداری جیسے گھپلے سامنے آئے ہیں، جن کے مطابق بلیک لسٹ کمپنیوں کو تقریبا 3 کروڑ کے غیر قانونی ٹھیکے دیئے گئے، غیر قانونی بھرتیاں اور تقرریاں کی گئیں، اور ایک جعلی کمپنی احمد میڈیکس کے ذریعے ریسکیو وہیکلز خریدی گئیں۔

چار ماہ قبل محکمہ اینٹی کرپشن نے ریسکیو 1122 کے ڈائریکٹر جنرل ڈاکٹر رضوان اور دیگر10 افسرا ن کے خلاف بدعنوانی کا مقدمہ درج کرنے کی سفارش کی تھی، مگر مقدمہ تاحال درج نہ ہوسکا، جس پر محکمہ اینٹی کرپشن نے ان تمام افسرا ن کو ریکارڈ سمیت دوبارہ طلب کرلیا ہے۔

  • agar Zardari ki hakomat hoti to….. baba hamara 10% hissa do aur jitna loot sakte ho loot lo..

    agar Nawaz sharif ki hakomat hoti…. mujrim ki phenti lagane ke bad 90% khud bator lete aur 10% mujrim ko dete, aur aainda hissa pohanchane ki shart par DAKA dalne ki ijazat dete…

    PTI hakomat: Mujrim ke khilaf qanoni karwai ka aghaz….

    Pakistani judiciary: 300 Rs per crime do aur apna mujrim chura lo…


  • Featured Content⭐


    24 گھنٹوں کے دوران 🔥


    From Our Blogs in last 24 hours 🔥


    >