اویس نورانی کے بیان پر وزیراعلیٰ بلوچستان جام کمال،حکومتی رہنماؤں کا شدیدردعمل

اویس نورانی کے بیان پر وزیراعلیٰ بلوچستان جام کمال،حکومتی رہنماؤں کا شدیدردعمل

جمیعت علمائے اسلام (ف) کے رہنما اویس نورانی کے آزاد بلوچستان ریاست کے بیان کے خلاف حکومتی رہنماؤں کی جانب سے شدید ردعمل سامنے آرہا ہے۔

وزیراعظم عمران خان کے معاون خصوصی ڈاکٹر شہباز گل نے کہا کہ اویس نورانی اور پاکستان ڈیموکریٹک موومنٹ نے آج ریاست کو توڑنے کی بات کرکے آئین کے آرٹیکل 124/125 کی صریحاً خلاف ورزی کی ہے، اب وکلاء برادری اور بار کونسلز کے آگےآنے کا وقت ہے، ملک و ریاست پر کسی کو حملہ کرنے نہیں دیں گے عمران خان ان تمام چوروں کا اکیلے مقابلہ کریں گے۔

وزیراعلی بلوچستان جام کمال نے اپنے ٹویٹر پیغام میں کہا کہ بلوچستان کو آزاد ریاست بنانے کی بات کی گئی ہے، پی ڈی ایم کس کے بیانیے پر چل رہی ہے؟ یہ جلسہ پی ڈی ایم کا تھا یہ بی جے پی کا؟

مشہور دانشور اور تجزیہ کار زید حامد نے کہا کہ آزاد بلوچستان کے بیان کی بغاوت و غداری کے سوا اور کیا تشریح ہوسکتی ہے، یہ کانگریسی مولوی ہمیشہ سے ہی پاکستان کی ریاست کے دشمن ہیں، کیا حکمران اس بیان پر نوٹس لیں گے؟

وزیراعظم عمران خان کے فوکل پرسن ڈاکٹر ارسلان خالد نے اویس نورانی کے بیان پر مریم نواز کی خاموشی پر سوال اٹھا دیا۔

یاد رہے کہ جمیعت علمائے اسلام ف کے رہنما اویس نورانی نے کوئٹہ میں پی ڈی ایم کے جلسے سے خطاب کے دوران کہا کہ غاصب لٹیرے اور ڈاکوؤں سے عوام کو نجات دلانی ہے، ہم چاہتے ہیں کہ بلوچستان ایک آزاد ریاست ہو۔

 

  • State should investigate Awais Noorani and his bank accounts, that, if there is an element of foreign funding purposely. In the case of Mufti Naeem, a massive money was found in his different bank accounts as reported in newspapers which rise questions and should also be investigated in the same way.

  • ا تنا بڑا ایکش آپ کو نظر نہیں آیا ؟ غداری والے اس بیان کے بعد چیف جسٹس آف پاکستان نے سؤ موٹو لے لیا ہے اور آئین پاکستان کی بتیاں بنانے کا آرڈر دے دیا ہے تاکہ کو تمام جنرلز کور کمانڈرز باجوے ڈی جی آئی ایس سمیت تمام جنرلز کے ساتھ ساتھ تمام ججز کو دی جا سکیں جو خاموش رہ کر کانگریس اور انڈیا سے اپنی وفاداری نبھا کر ڈیوٹی سر انجام دے رہے ہیں اور تمام جنرلز میں تو اس ملک دشمنُ بیان پر تشویش کی لہر دوڑ گئی ہے اور اس تشویش کے نتیجے میں ان سب کے ٹوائلٹ کا پانی ختمُ ہوگیا ہے اور۔ باجوے سمیت کچھ کو کو ڈی ہائڈریشن ہوگئی ہے
    بس وہ اسی انتظار میں ہیں کہ چیف جسٹس کے آ رڈرز پر بننے والی آئین کی بتیاں مکمل بنُ جائیںُ تو وہ بھی فوج کےخلاف سازشیوں کو وارن کرنے والیُ ڈان لیکس والی جو ٹویٹ واپس لی تھی اس کے ساتھ ساتھ ہر اس ٹویٹ کو واپس لیا جائے جو کسی بھی غدار کے خلاف آئی ایس پی آر کی طرف سے دی گئی تھی اس کی بھی بتیاں بنا کر اس غداری کی بیان کے بعد ہنگامی رکور کمانڈرز کانفرنس کا انعقاد کرکے سارےکر کے سارے جرنیل اور کور کمانڈرز کو وہ آئینی بتیاں اور ٹویٹس کی بتیاں دے کر ملک بچایا جاسکے
    سب سے زیادہ تشویش کی لہر جٹ باجوے میں دوڑی ہے اور اس نے اس تشویش کی وجہ سے اپنے مونڈھوں پر ڈانگ رکھ لی ہے اور اپنے ٹوائلٹ میں پانی کی کمی کو پورا کرنے کا فوری حکم جاری کردیا ہے
    اور تو اور جٹ برادرز مٹھائی والوں کی دکان سے آرڈر پر رس گلوں کا انتظام کر لیا ہے تاکہ رات کو دو دو بجے ہر غدار کو بلا کر زبردستی رس گلے کھلا کر انڈیا سے محب وطنی حب جٹ نی کا اظہار کرکے ملک بچانے اور اپنی ڈیوٹی اور فرائض نبھانے کا فرض ادا کیا جائے تمام جنرلز نے اپنے پیر و مرشد منیرے کنجر رحیم یار خانی اور اسکے بہنوئی سے رابطہ۔ بھی کر لیا ہے تاکہ مافیا کی حکومت قائم۔ ہونے۔ کے۔ بعد اور اپنی ریٹائرمنٹ کے بعد تمام۔ جنرلز اپنی سینیٹ کی سیٹ یقینی بنا سکیں اور باجوے کو تو سینیٹ کا۔ چیئرمین بنانے کا وعدہ کیا ہے انٹر نیشنل اسٹبلشمنٹ نے اسی واسطے ہر غدار کو پورا پورا تحفظ دے کر اور خاموش ادا کار رہ کر حرام زادوں گشتیوں کے بچے چوروں غداروں کو رس گلے کھلا کر ملک کی پوری۔ پوری خدمت کررہا ہے اب باجوے کا ملک جس کی یہ خدمت کر رہا ہے بس اس کا ابھی معلوم نہیں بس یہ معلوم کرنا باقی ہے باجوے کا ملک کونسا ہے جس کو یہ بچانے کی خدمت اور اپنی ڈیوٹی سر انجام دے رہا ہے پاکستان کے غداروں کو بچا کر بس باجوے کے ملک جا معکومُ کرنا باقی ہے شاید تمام کور کمانڈرز کو معلوم ہوگا کیونکہ اگر پاکستان کی سلامتی کا سوال ہوتا تو جیسے جنرلز کی دم پر خادم رضوی اور پیر قادری کا پاؤں آیا تھا تو ملکی سلامتی کے اداروں میں فوری ایکشن کر کے ان کو گرفتار کر لیا تھا لیکن پاکستان تو شاید لا وارث ہے اس سے زیادہ عزت جنرلز کی ہے جن کی دم پر پاؤں آجائے تو ایکشن بھی ہوتا ہے اور گرفتاری بھی سوال آخر ملکی سلامتی کا معاملہ ہے (مگر ملک کونسا ہے یہ ایک قومی راز ہے اور جاہل عوام کو یہ نہیں بتایا جا سکتا آ خر انڈیا کی سلامتی اور بلوچستان کی علیحدگی کا سوال ہے اور عالمی اسٹبلشمنٹ کا بھی
    یہ ایک راز ہے ویسے آئی ایس پی آر نے بھی فوری ایکشن لےر جو ایک ٹویٹ واپس اپنے یا کسی جنرل کےپچھواڑے میں لی تھی اسی طرح ہر وہ ٹوئٹ جو ملک دشمنوں فوج دشمنوں کے خلاف پہلے آئی ایس پی آر نے کبھی دی تھیں ملک دشمنوں فوج دشمنوں کے خلاف وہ سب ڈیلیٹ کر کے انکی بتیاں بنا کر آئیندہ کور کمانڈرز اجلاس میں تمامُ جنرلز کو آئین کی بتیوں کے ساتھ دی جائیں کہُ حلف پاکستان بچانے کا نہیں ملک اور آئین بچانے کا اٹھایا تھا بس ابھی تک انکے اس ملک کا پتہ نہیں چل سکا جس کو بچانے کا حلف اٹھایا تھا پنجابی کو کمانڈرز نے اور چیف ُجسٹس نے شاید نواز شریف بٹ کے کشمیری مافیا کو بچانے کا حلف تھا یا کانگریسی مولویوں ملک دشمنوں کو بچانے کا یہ شاید پاکستان کی عوام کو کسی نئی حمود الرحمان کمیشن میں پتہ چلے گا


  • Featured Content⭐


    24 گھنٹوں کے دوران 🔥


    From Our Blogs in last 24 hours 🔥


    >