پی ٹی وی کیس:عمران خان کے ملوث ہونے کا کوئی ثبوت نہیں بری کیا جائے،وکیل کی استدعا

وزیراعظم عمران خان کے وکیل عبداللہ بابر اعوان نے پی ٹی وی اور پارلیمنٹ پر حملہ کیس میں وزیراعظم عمران خان کی بریت کی درخواست پر تحریری دلائل اے ٹی سی میں جمع کروا دیئے ہیں۔

وزیراعظم کے وکیل عبداللہ بابر اعوان کی جانب سے اے ٹی سی میں جمع کروائے گئے تحریری دلائل میں کہا گیا ہے کہ کسی گواہ نے عمران خان کے مقدمے میں ملوث ہونےکا بیان نہیں دیا، عمران خان کیخلاف پی ٹی وی پارلیمنٹ حملہ کیس کا کوئی ثبوت نہیں، یہ کیس سیاسی مقدمہ تھا ،سزا کا کوئی امکان نہیں۔

وکیل نے کہا کہ عمران خان کو جھوٹے اور بےبنیاد مقدمے میں پھنسایا گیا، ضابطہ فوجداری کی دفعہ265کےتحت عمران خان کو بری کیا جائے، انسداددہشت گردی عدالت نےعمران خان کی درخواست پرفیصلہ محفوظ کررکھا ہے، عمران خان کی بریت کی درخواست پرفیصلہ 29 اکتوبر کو سنایا جائے گا۔

واضح رہے کہ پاکستان تحریک انصاف نے پاکستان عوامی تحریک کے ساتھ مل کر 2014 میں 126 دن کا اسلام آباد کے ڈی چوک میں دھرنا دیا تھا اور اسی دھرنے کے دوران پاکستان ٹیلی ویژن اور پارلیمنٹ پر حملہ کیا گیا تھا، جس پر عمران خان سمیت پارٹی کے دیگر رہنماؤں پر 2014 کے دھرنے کے دوران 4 مقدمات درج کیے گئے تھے۔


Featured Content⭐


24 گھنٹوں کے دوران 🔥


From Our Blogs in last 24 hours 🔥


>