امریکی ڈالر کے مقابلے روپے کی قدر میں اضافے کا رجحان برقرار 

امریکی ڈالر کے مقابلے روپے کی قدر میں اضافے کا رجحان برقرار 

حکومتی پالیسیوں اور شرح سود میں کمی کی وجہ سے امریکی ڈالر کی قدر میں مسلسل کمی کا رجحان برقرار ہے، رواں ہفتے کے پہلے کاروباری روز کے دوران انٹر بینک میں امریکی ڈالر 32 پیسے سستا ہونے کے بعد 161 روپے 05 پیسے کی سطح پر پہنچ گیا ہے۔

خبر رساں ادارے کی رپورٹ کے مطابق گزشتہ دو ماہ سے امریکی ڈالر کی قدر میں کمی اور روپے کی قدر میں ریکوری دیکھنے کو مل رہی ہے، امریکی ڈالر ایف اے ٹی ایف کی طرف سے ملک پر چھائے خدشات چھٹنے ، ملکی ترسیلات زر میں اضافہ، کرنٹ اکاؤنٹ سرپلس اور عالمی ممالک کی طرف سے غریب ممالک کے لیے ریلیف ملنے کے بعد پاکستان کی بیرونی ادائیگیاں رک جانے کے باعث ڈالر کی قدر میں کمی واقع ہو رہی ہے۔

پاکستان سٹیٹ بینک کی جانب سے ٹویٹر پر پہلے کاروباری روز کے جاری اعدادوشمار کے مطابق انٹر بینک میں امریکی ڈالر کی قدر میں مزید 32 پیسے کی کمی ریکارڈ کی گئی ہے، گزشتہ ہفتے کے آخری کاروباری روز امریکی ڈالر 161 روپے 37 پیسے کی سطح پر پہنچ کربند ہوا تھا، جو اب 32 پیسے کی کمی کے بعد 161 روپے 05 پیسے کی سطح پر پہنچ گیا ہے۔

  • Stocks were in the green on Monday with the benchmark KSE-100 index climbing 585 points, to close at 41,850 – up 1.4 per cent.
    Appreciation of the rupee in currency markets, strong growth in industrial sectors like cement, automobiles, construction, fertilizer, textiles etc. point towards a positive economic sentiment in the country.
    Tax revenues are also rising and current account in surplus.

    Kudos to Kaptaan & his financial team….what a turnaround in just 2 years time, despite the devastating economy left by Nawaz’s PMLN & Covid-19 fallout.


  • Featured Content⭐


    24 گھنٹوں کے دوران 🔥


    From Our Blogs in last 24 hours 🔥


    >