مفت پلاؤ نہ کھلانے پردکاندارکو دھمکانے والا پولیس اہلکار کا جسمانی ریمانڈ منظور

کراچی کی مقامی عدالت نے کھارادر میں مفت کھانا نہ دینے پر شہری کو اسلحہ کے زور پر دھمکانے والے پولیس اہلکار محفوظ کا ایک روزہ جسمانی ریمانڈ منظور کرتے ہوئے پولیس کے حوالے کردیا۔

تفصیلات کے مطابق کراچی کی سٹی کورٹ کے جوڈیشل مجسٹریٹ جنوبی کی عدالت میں پولیس اہلکار محفوظ کو کھارادر میں مفت کھانا نہ دینے پر شہری کو اسلحے کے زور پر دھمکانے کے مقدمے میں پیش کیا گیا۔

تفتیشی افسر کا اس موقع پر جوڈیشل مجسٹریٹ جنوبی کے سامنے اہلکار کو پیش کرتے ہوئے کہنا تھا کہ پولیس اہلکار نے کھارادر میں شہری کو مفت پلاؤ نہ دینے پر اسلحے کے زور پر دھمکیاں دیتے ہوئے گالیاں دی ہیں، تاہم ملزم محفوظ سے مزید تفتیش درکار ہے، استدعا ہے کہ ملزم کا جسمانی ریمانڈ دیا جائے۔

عدالت نے تفتیشی افسر کی ابتدا منظور کرتے ہوئے آئندہ سماعت پر پیش رفت رپورٹ پیش کرنے کا حکم دیتے ہوئے ملزم محفوظ کا ایک روزہ جسمانی ریمانڈ منظور کرتے ہوئے پولیس کے حوالے کردیا۔

واضح رہے کہ اس سے ایک ماہ قبل کراچی کے علاقے سعودآباد میں بھی پولیس کی غنڈہ گردی کا واقعہ سامنے آگیا، دودھ کی دکان پر مفت میں لسی اور دودھ کی بوتلیں نہ دینے پر پولیس اہلکار آپے سے باہر ہوگئے اورکرسیوں کو لاتیں ماریں اور ایک شخص کو اپنے ساتھ لے گئے۔

فوٹیج میں ملیر سعود آباد تھانے کے اہلکاروں کو آر سی ڈی گراؤنڈ کے قریب قائم ملک شاپ میں توڑ پھوڑ کرتے دیکھا جا سکتا ہے، اہلکاروں نے کرسیوں کو لات مار ی اور دکان دار پر تشدد بھی کیا۔ ایک اہلکار کو فریزر سے دودھ کی بوتلیں نکال کر لے جاتے ہوئے بھی دیکھا جا سکتا ہے۔


  • Featured Content⭐


    24 گھنٹوں کے دوران 🔥


    From Our Blogs in last 24 hours 🔥


    >