تین ارب کی کرپشن کا الزام، احتساب عدالت نے فیصلہ سنادیا

احتساب عدالت نے ملیر کی 1729 ایکٹر زمین کی غیر قانونی الاٹمنٹ کے ریفرنس کا فیصلہ سناتے ہوئے جرم ثابت ہونے پر سرکاری ملازمین سمیت 7 ملزمان کو 10، 10 سال قید کی سزا سناتے ہوئے تمام ملزمان کو فی کس 50 لاکھ روپے ادا کرنی کا سزا سنا دی۔

احتساب عدالت نے جرم ثابت ہونے پر جن سرکاری ملازمین سمیت 7 ملزمان کو سزا سنائی ہے ان میں سالک نکروچ، عبدالعزیز، شاہد رضا شاہ، واحد بخش، زمان، لعل محمد اور فضل حسین شامل ہیں، ان میں سے سالک مختیار کار اور عبدالعزیز تپے دار اور سب رجسٹرار شامل ہیں۔

قومی احتساب بیورو کی جانب سے جاری کیے گئے اعلامیے کے مطابق تمام ملزمان نے ملیر میں 1729 ایکڑ کی غیر قانونی الاٹمنٹ کے ذریعے قومی خزانے کو تین ارب روپے کا نقصان پہنچایا تھا، جس پر ملزمان کے خلاف ریفرنس دائر کیا گیا تھا۔

نیب نے اپنے اعلامیے میں بتایا ہے کہ غیر قانونی الاٹمنٹ کے کیس کے مرکزی ملزمان آفتاب میمنہ اور صابر کو ریفرنس سے پہلے ہی علیحدہ کردیا گیا تھا کیونکہ آفتاب میمن پہلے ہی جعلی اکاؤنٹس کیس میں جیل میں ہیں جبکہ دوسرا مرکزی ملزم صابر اس وقت کومہ میں ہے۔


  • Featured Content⭐


    24 گھنٹوں کے دوران 🔥


    From Our Blogs in last 24 hours 🔥


    >