وزارت سائنس اور برطانوی نجی کمپنی کے مابین الیکٹرک بسوں کا معاہدہ طے

اسلام آباد میں وزیر سائنس اینڈ ٹیکنالوجی فواد چودھری اور برطانوی کمپنی کے سی ای او نے معاہدے کی یاد داشت پر دستخط کیے۔ برطانوی کمپنی پہلے مرحلے میں پاکستان کیلئے بسیں تیار پھر یہاں تیاری میں مدد کرے گی۔

وفاقی وزیر فواد چودھری نے کہا آلو، مٹر بیچ کر نہیں صرف ٹیکنالوجی سے ترقی ممکن ہے ،بجلی بس کا پہلا معاہدہ چین، دوسرا یورپین کمپنی کے ساتھ کیا گیا، پہلے مرحلے میں اسلام آباد، کراچی اور لاہور میں الیکٹرک بسیں چلائی جائیں گی۔انہوں نے کہا کہ پاکستان اس مقابلے میں بھارت کو جلد پکڑ لے گا، اگلے دو تین برسوں میں پورا موٹروے نیٹ ورک الیکٹرک گاڑیوں کی چارجنگ پر شفٹ ہوجائے گا۔

فواد چودھری نے سابق حکومت پر تنقید کرتے ہوئے کہا کہ لاہور کی میٹرو ٹرین پر اربوں روپے لگا دیئے گئے،اسے سالانہ 12 ارب روپے سبسڈی دینا پڑے گی۔

فواد چودھری نے یہ بھی کہا کہ ہم جے ایف 17تھنڈر اور خالد ٹینک بنا رہے ہیں مگر اپنا ٹی وی اورموبائل نہیں بنا سکے۔ ہم جب تک الیکٹرانک چیزیں نہیں بنائیں گے تب تک معاشی مسئلے حل نہیں ہوں گے۔

برطانوی نجی آٹو موبائل کمپنی کے سی ای او کا پاکستان میں آمد پر خوشی کا اظہار کرتے ہوئے وفاقی وزیر کا کہنا تھا ہم پاکستان کی ترقی میں اپناکردار ادا کرنا چاہتے ہیں۔

اس حوالے سے بتاتے ہوئے کا وفاقی وزیر فواد چودھری نے ٹوئٹر پر کہا کہ ان کی وزارت نے پاکستان میں 2 نئی صنعتیں شروع کرائی ہیں جن میں سے ایک میڈیکل مشینری اور دوسری الیکٹرک گاڑیوں کی صنعت ہے۔

فواد چودھری نے کہا کہ یہ دونوں صنعتیں پاکستان میں موجود ہی نہیں تھیں مگر اب جبکہ یہ دونوں صنعتیں کام شروع کر رہی ہیں تو آئندہ 4 سالوں میں ان میں کئی ارب ڈالرز کی سرمایہ کاری ہوگی۔

وفاقی وزیر فواد چودھری نے بتایا کہ آئندہ4 سال میں میڈیکل مشینری کی صںعت میں 3 بلین ڈالر جبکہ الیکٹرک گاڑیوں کی صنعت میں 3 سے 5 ارب ڈالر کی سرمایہ کاری ہوگی۔


  • Featured Content⭐


    24 گھنٹوں کے دوران 🔥


    From Our Blogs in last 24 hours 🔥


    >