شہباز شریف کیلئے بڑا ریلیف، نام ای سی ایل میں ڈالنے کی نیب کی اپیل خارج

مسلم لیگ ن کے صدر میاں شہباز شریف کا نام ای سی ایل میں ڈالنے کیلئے نیب کی درخواست پر فیصلہ آگیا، شہباز شریف کو بڑا ریلیف مل گیا ہے۔

خبر رساں ادارے کی رپورٹ کے مطابق سپریم کورٹ نے شہباز شریف کا نام ای سی ایل میں ڈالنے کی نیب کی درخواست کو خارج کردیا ہے۔

سپریم کورٹ کے جج جسٹس مشیر عالم کی سربراہی میں 2 رکنی بینچ نے شہباز شریف کا نام ای سی ایل میں نہ ڈالنے کے لاہور ہائی کورٹ کے فیصلے کے خلاف نیب کی درخواست کی سماعت کی، سماعت کے دوران جسٹس منیب اختر نے ریمارکس دیتے ہوئے کہا کہ نیب نے جسٹس قاضی فائز عیسیٰ کیس کے فیصلے کو پڑھنے کی زحمت بھی نہیں کی۔

نیب نے آمدن سے زائد اثاثہ جات کیس میں شہباز شریف کا نام ای سی ایل سے نکالنے کے حکم کے خلاف سپریم کورٹ میں درخواست دائر کی تھی، نیب پراسیکیوٹر جہانزیب بھروانہ نے عدالت میں موقف اپنایا کہ مشکوک ٹرانزیکشنز کی وجہ سے شہباز شریف کرپشن کے مرتکب ہوئے ہیں۔

کئی ملزمان دوران انکوائری ملک سے فرار ہوجاتے ہیں، آمدن سے زائد اثاثہ جات کے اسی ریفرنس میں پہلے ہی 6 ملزمان مفرور ہیں، کیس میں کافی پیش رفت ہوچکی ہے شہباز شریف کا نام دوبارہ سے ای سی ایل پر ڈالا جائے۔

2 رکنی بینچ میں شامل جسٹس منیب اختر نے ریمارکس دیتے ہوئے کہا کہ جسٹس قاضی فائز عیسیٰ کیس میں سپریم کورٹ اینٹی منی لانڈرنگ قوانین کی تشریح کرچکی ہے، مشکوک ٹرانزیکشنز کو کرپشن کے زمرے میں شامل نہیں کیا جاسکتا، نیب نے یہ فیصلہ پڑھنے کی زحمت بھی نہیں کی ہے۔

سپریم کورٹ کے جج نے ریمارکس دیتے ہوئے مزید کہا کہ ہائی کورٹ شہباز شریف کا نام ای سی ایل سے نکالنے کے حکم کے وقت ان پر سفری پابندی غیر ضروری تھی، شہباز شریف کا نام ای سی ایل پر ڈالنے سے ہوگا کیا؟ نیب نے دوران انکوائری شہباز شریف کا نام ای سی ایل میں شامل کردیا، کیا نام ای سی ایل سے ہٹائے جانے کے بعد شہباز شریف ملک سے فرار ہوگئے؟ وہ ایسے شخص تو نہیں ہیں کہ فرار ہوجائیں اور کہیں چھپ جائیں جیسے انہیں کوئی جانتا نہیں ہے۔

نیب ہائی کورٹ کے فیصلے میں کسی قسم کا سقم و نقص ثابت کرنے میں ناکام رہی ہے اس لیے شہباز شریف کا نام ای سی ایل پر ڈالنے کی اپیل کو خارج کیا جاتا ہے۔

یاد رہے کہ آمدن سے زائد اثاثہ جات کیس میں احتساب عدالت نے شہباز شریف کا نام ای سی ایل پر ڈالنے کا حکم دیا تھا، جس کے بعد شہباز شریف نے لاہور ہائی کورٹ سے اس فیصلے کے خلاف رجوع کیا اور لاہور ہائی کورٹ سے فیصلہ حق میں آنے کے بعد ان کا نام ای سی ایل سے نکال دیا گیا، مگر نیب نے لاہور ہائی کورٹ کے اس فیصلے کو سپریم کورٹ میں چیلنج کردیا تھا۔

  • Barey Mian ko bhaijnay waley judges,kis munh say kehtay hain ke wo chupnay waley nahi. Qazi Isa ko bachaney kay liye ye judge sahiban sarey criminals ko bachaney per tulleyhuwey hain. Allah rehim karey.


  • Featured Content⭐


    24 گھنٹوں کے دوران 🔥


    From Our Blogs in last 24 hours 🔥


    >