کراچی: نوجوان پر بہیمانہ تشدد کی فوٹیج سامنے آنے پر پولیس اہلکار گرفتار

کراچی کے علاقے محمود آباد میں رواں ماہ ایک نوجوان شہری کو بدترین تشدد کا نشانہ بنایا گیا تھا، تشدد کرنے والوں میں پولیس اہلکاروں کے ملوث ہونے کی اطلاعات بھی تھیں جن میں ایک پولیس اہلکار گرفتار ہوگیا ہے۔

تفصیلات کے مطابق محمود آباد کے رہائشی اسامہ کو 4 اکتوبر کی شام اپنی ہی گلی میں 8 سے 10 موٹر سائیکل سواروں نے بدترین تشدد کا نشانہ بنایا تھا، دوران تفتیش نوجوان پر تشدد کرنے والوں میں پولیس اہلکاروں کے ملوث ہونے کے شواہد بھی ملے تھے۔

پولیس نے کارروائی کرتے ہوئے گارڈن پولیس ہیڈ کوارٹرز میں ایک پولیس اہلکار کی شناخت ہونے پر حارث نیازی کو گرفتار کرلیا، اس کی نشاندہی پر پولیس اس کے ساتھیوں کی گرفتاری کیلئے مختلف مقامات پر چھاپے ماررہی ہے۔

یاد رہے کہ تشدد کا شکار اسامہ نے واقعے کے بعد محمود آباد تھانے میں مقدمہ درج کروانے کیلئے درخواست دی مگر پولیس نے مقدمہ درج نہ کیا، تاہم واقعے کی تصاویر اورویڈیوز سوشل میڈیا پر وائرل ہونے کے بعد پولیس نے مقدمہ درج کرکے کارروائی شروع کردی۔

پولیس نے بتایا معاملہ ذاتی دشمنی کا تھا، اسامہ نے تشدد ہونے والے دن سے ایک روز قبل موٹر سائیکل کھڑی کرنے کے معمولی معاملے پر ایک دوسرے لڑکے کی پٹائی کی تھی جس پر اس نوجوان نے بدلہ لینے کیلئے علاقے کے غنڈہ گرد عناصر سے مدد لینے کی کوشش کی اور اسامہ کو مار پیٹ کا نشانہ بنایا۔


Featured Content⭐


24 گھنٹوں کے دوران 🔥


From Our Blogs in last 24 hours 🔥


>