فیصل جاوید نے پاک فرانسیسی پارلیمانی فرینڈ شپ گروپ کی سربراہی چھوڑ دی

فیصل جاوید نے پاک فرانسیسی پارلیمانی فرینڈ شپ گروپ کی سربراہی چھوڑ دی

پاکستان تحریک انصاف کے رہنما فیصل جاوید نے پاک فرانسیسی پارلیمانی فرینڈ شپ گروپ کی سربراہی چھوڑ دی
پاکستان تحریک انصاف کے سینیٹر فیصل جاوید نے فرانس کی جانب سے گستاخانہ خاکوں کی حمایت پر احتجاجاً پاک فرانسیسی پارلیمانی فرینڈ شپ گروپ کی سربراہی چھوڑنے کا اعلان کردیا ہے۔

فرانس کے صدر ایمانوئیل میکرون کی جانب سے حضور اکرم ﷺ کے گستاخانہ خاکوں کی حمایت اور اسلام مخالف بیانات کے بعد دنیا بھر میں مسلمانوں کی جانب سے شدید ردعمل سامنے آرہا ہے، اس معاملے پر اپنا احتجاج ریکارڈ کرواتے ہوئے سینیٹر فیصل جاوید نے پاک فرانسیسی پارلیمانی فرینڈ شپ گروپ کی سربراہی سے مستعفیٰ ہونے کا اعلان کرتے ہوئے اپنا استعفیٰ چیئرمین سینیٹ کو بھجوادیا ہے۔

ان کا کہنا تھا کہ وزیراعظم عمران خان نے اقوام متحدہ کی جنرل اسمبلی سے خطاب کے دوران اسلاموفوبیا کا معاملہ اٹھایا تھا، مگر فرانسیسی صدر کے بیان اور گستاخانہ خاکوں کی حمایت سے یورپی ممالک میں اسلاموفوبیا کو نہ صرف فروغ ملے گا بلکہ ان ممالک میں انتہا پسندی بھی بڑھے گی، عمران خان نے دنیا کو بتادیا ہے کہ فرانسیسی حکومت کے اقدامات انسانیت کو نقصان پہنچا سکتے ہیں۔

فیصل جاوید نے پارلیمانی فرینڈ شپ گروپ کی سربراہی سے مستعفیٰ ہوتے ہوئے کہا کہ میں فرانسیسی حکومت کے انتہا پسند رویے کیخلاف احتجاجاََ اس فورم کی سربراہی چھوڑنے کا اعلان کرتا ہوں، اور ساتھ ہی میری سفارش ہے کہ دونوں ملکوں کی پارلیمانی سطح پر قائم کیے گئے اس فورم کو مکمل طور پر تحلیل کردیا جائے۔

فیصل جاوید نے پاک فرانسیسی پارلیمانی فرینڈ شپ گروپ کی سربراہی چھوڑ دی

انہوں نے مزید کہا کہ جو نقصان فرانسیسی حکومت انسانیت کو پہنچا سکتی ہے وہ شائد نازی اور نسل پرست بھی نہیں پہنچا سکتے تھے،مقدس ہستیوں کی توہین کے خلاف عالمی سطح پر قانون سازی وقت کی ضرورت ہے،فرانسیسی حکومت کی جانب سے اظہار رائے کی آزادی کے نام پر دنیا بھر کے مسلمانوں کے جذبات مجروح نہیں ہونے دیں گے، یہ منطق ناقابل قبول ہے۔


  • Featured Content⭐


    24 گھنٹوں کے دوران 🔥


    From Our Blogs in last 24 hours 🔥


    >