فضل الرحمان علماء کو چھوڑ کر مریم نواز اور زرداری کے ترجمان بن گئے،مولانا قاسم

فضل الرحمان کو علماکے ساتھ نہیں مریم نواز کے ساتھ بیٹھنا اچھا لگتا ہے،مولانا قاسم

مولانا فضل الرحمان کو علماء کے ساتھ بیٹھنا اچھا نہیں لگتا، مریم نواز کے ساتھ بیٹھنا اچھا لگتا ہے۔

جمیعت علماء اسلام ف کے سربراہ مولانا فضل الرحمان کے سیاسی کردار پر شدید تنقیدکرتے ہوئے مولانا قاسم نے انہیں یاد دلا یا کہ آپ مذہبی رہنما تھے جو مذہب کی ترجمانی کرتے تھے مگر آج آپ سیاست دانوں کے ترجمان بن گئے ہیں۔

سوشل میڈیا پر وائرل ہونے والی ایک ویڈیو میں مولانا قاسم مولانا فضل الرحمان پر تنقید کرتے ہوئے دکھائی دیتے ہیں، انہوں نے کہا کہ قسم کھا کر کہہ رہا ہوں ہمیں یہ اچھا نہیں لگتا کہ آپ کے ایک طرف مریم نواز اور دوسری جانب بلاول بھٹو بیٹھے ہوں، آپ کہتے ہیں کہ عمران خان کے تعفن سے پورا پاکستان بدبودار ہوگیا ہے میں کہتا ہوں کہ مریم او ر بلاول کے کردار سے پورا پاکستان برباد ہے۔

انہوں نے مزید کہا کہ آپ مجاہدین کے ترجمان تھے، طالبان کے ترجمان تھے آپ کے سامنے لا الہ الا اللہ والے ہوتے تھے مگر افسوس آج آپ نواز شریف، زرداری، اسفند یار ولی کے ترجمان ہیں، آج آپ محمود خان اچکزئی کے ساتھی اور دوست ہونے پر فخر کرتے ہیں۔

انہوں نے مولانا فضل الرحمان کے پی ڈی ایم کا حصہ بننے پر تنقید کرتے ہوئے کہا کہ آج ناچ گانے، رقص کے درمیان میں شیخ الحدیث بھی کھڑا ہے، مسجد کا امام، مدرس بھی کھڑا ہے، شیخ الحدیث جو کل آکر مجھے احادیث کی تعلیم دےگا آج مریم نواز کی زیارت کیلئے کھڑا ہے، مولانا صاحب بتائیں جس انداز میں مریم آپ کے ساتھ بیٹھی ہیں کیا ایسے بیٹھنا جائز ہے یا ناجائز۔

  • ان علماء اکرام کو سلوٹ جو منافق اعظم مولانا ڈیزل کے خلاف آواز بلند کر رھے ھیں کیونکہ مولانا ڈیزل اپنے ذاتی مفادات کی خاطر اسلام فروشی کرتا ھے مدرسے کے بچوں نام کو استعمال کر کے چندے وصول کرتا ھے پختون قوم کے خون کے دو سوداگر ہیں محمود خان اچکزئی اور ڈیزل

  • فضل الرحمن سیاست میں ایک بدنام زمانہ لیڈر ہے اس کا انداز سیاست انتہائی منافقا نہ ۔۔۔۔۔۔ اس پر اگر کوئی جملہ کسا جائے اس کو فورا عوام میں پزیرائی ملتی ہے لوگ اس کے طرز سیاست کو انتہائی نفرت سے دیکھتے ھیں یہ اپنے آپ کو ایک مذہبی رہنماء کے طور پر پیش کرتا ہے لیکن اس میں مذہب نام کی کوئی چیز نہیں ہے سب پہلے اسے ڈیزل کے پرمٹ پر سیاست کرنے والا اس کے اتحادیوں نے بولا اور آج تک اس کی جائیداد ڈیزل پرمٹ کو لے کر کئ باتیں ہو چکی ہیں جس کو آج تک یہ کلیر نہیں کرسکا اس کے اتحادی طرح طرح کی برائیوں میں مبتلا ہیں لیکن یہ ان کا ہم نوالہ ہم پیالہ ہے بس یہ اقتدار کا بھوکا شخص ہے جہاں سے مرضی ملے اور وہ جو مرضی کرے چاہے دین کے خلاف قانون سازی ہی کیوں نہ ہو اب اسے اقتدار سے باہر رہنا ہضم نہیں ہو رہا جس کی وجہ سے یہ ماہی بے آب کی طرح ترپ رہا ہے اور اب کرپشن پکڑے جانے کا خوف تو اسے رات دن بے چین کیے ہوئے ہے کیوں کہ اس کے بعد اس کا جیل جانا نظر آرہا ہے اور بدنامی علیحدہ ہے

  • مولوی صاحب نے بات عالم کی کی ہے اور یہُ حرام زادہ منافق اسلام فروش فراڈیا بد بودار فضلا تو چوپا ہے اور یہ لوطی اور چوپا اور ہچھواڑے کا ممیسیا عالمُہے اس حرام زادے کا علم لوطی کا ہیے


  • Featured Content⭐


    24 گھنٹوں کے دوران 🔥


    From Our Blogs in last 24 hours 🔥


    >