اسلام آباد میں جیولر کی دکان سے سینکڑوں تولے سونا اور نقدی سمیت بڑی چوری

دارالحکومت اسلام آباد میں پیر کی دوپہر سپر مارکیٹ میں ڈکیتی ہوئی جہاں 3 ڈاکو جیولر کی دکان میں گاہکوں کی صورت میں داخل ہوئے اور موقع پا کر اسلحہ کے زور پر 350 سے 400 تولہ سونے کے زیورات اور 40 لاکھ روپے نقدی لوٹ کر فرار ہو گئے۔

شیخ فرید نامی متاثرہ جیولر نے تھانہ کوہسار میں مقدمہ درج کرا دیا جس کے مطابق دوپہر کے وقت 3 لوگ دکان میں داخل ہوئے جو کہ پشتو میں بات کر رہے تھے انہوں نے گاہک بن کر زیورات دیکھنا شروع کیے اور بعد میں اسلحہ کے زور پر زیورات لوٹ کر جیولر اور اس کے ملازم کو بیت الخلا میں بند کر کے فرار ہو گئے۔

مقدمہ کے متن کے مطابق جیولر محمد فرید کا کہنا تھا کہ ایک چور کی عمر 25 سے 30 سال، دوسرے کی 35 سے 40 اور تیسرے کی 45 سال کے درمیان تھی، سامنے آنے پر ملزمان کو شناخت کر سکتا ہوں۔

پولیس حکام کا کہنا ہے کہ سپر مارکیٹ میں جیولر کی دکان پر ہونے والی ڈکیتی کے شواہد اکھٹے کیے جا رہے ہیں اور معاملے کی ہر زاویے سے تحقیقات کی جائے گی۔

ایک اندازے کے مطابق اس ڈکیتی کو اسلام آباد کی تاریخ کی سب سے بڑی ڈکیتی کہا جا رہا ہے کیونکہ اگر مالی تناسب سے دیکھا جائے تو اس سے قبل اسلام آباد میں اتنی بڑی ڈکیتی نہیں دیکھی گئی۔

  • یہ اب اسلام آباد پولیس کے لئے ایک بڑا سخت امتحان ہے سیکیورٹی کے حوالے سے دوسرا یہ بات بھی ذہن میں آرہی ہے کیا اس دکان پر سیکیورٹی گارڈ نہیں تھا؟۔ مجھے تو ملک کی سب سے بہترین اسلام آباد پولیس پر فخر ہے اور وہ انشاءاللہ سیکیورٹی سرویلینز کیمروں کی مدد سے ڈاکوؤں کو جلد ڈھونڈ نکالے گی۔


  • Featured Content⭐


    24 گھنٹوں کے دوران 🔥


    From Our Blogs in last 24 hours 🔥


    >