پیپلزپارٹی کی دوغلی پالیسی،کیا پشاور جلسے کے بعد بلاول بھٹو کورونا کا شکار ہو گئے؟

پیپلزپارٹی کی دوغلی پالیسی،کیا پشاور جلسے کے بعد بلاول بھٹو کورونا کا شکار ہو گئے؟

گزشتہ روز خاتون صحافی مہر بخاری کی جانب سے پیپلزپارٹی کی دوغلی پالیسی کو واضح کیا گیا انہوں نے سماجی رابطوں کی ویب سائٹ ٹوئٹر پر ٹوئٹ کی جس میں بتایا کہ پیپلزپارٹی ایک طرف تو ملتان میں ہونے والے جلسے کیلئے لوگوں کو جوق در جوق شمولیت کیلئے کہہ رہی ہے، انہوں نے اس کے ساتھ بلاول بھٹو کا ٹوئٹ اور بختاور بھٹو کی منگنی کی تقریب کا کارڈ بھی شیئر کیا۔

مہر بخاری نے کہا کہ دوسری جانب بختاور بھٹو کی منگنی کی تقریب میں شرکت کےلیے کورونا نیگیٹو ٹیسٹ مانگے جا رہے ہیں اور کہا جا رہا ہے کہ تقریب میں شرکت کے لیے پہلے اپنا پی سی آر ٹیسٹ کرا کے رپورٹ ای میل کریں تاکہ مہمانوں اور آپ کی حفاظت کو یقینی بنایا جا سکے۔

اس پر ردعمل دیتے ہوئے اینکر پرسن کامران خان نے کہا یہ پیپلزپارٹی کا دوہرا معیار ہے بالکل اسی طرح جیسے اب بلاول بھٹو نواز شریف کو میاں صاحب جبکہ کچھ ہی مہینوں پہلے نواز شریف کہہ کر مخاطب کیا کرتے تھے۔

اس کے ساتھ ہی کامران خان نے سماجی رابطوں کی ویب سائٹ فیس بک پر پوسٹ میں انکشاف کیا کہ بلاول بھٹو کی پشاور جلسے کے بعد طبیعت ناساز ہے اور ان میں کورونا کی علامتیں پائی جا رہی ہیں۔ انہیں ڈاکٹروں نے قرنطینہ کا مشورہ دے دیا ہے اور یہ بھی ہو سکتا ہے کہ وہ اس منگنی کی تقریب میں بھی شریک نہ ہو سکیں۔

کامران خان نے لکھا کہ کوئی سرکاری تصدیق نہیں لیکن بلاول ہاؤس ذرائع سے ٹھوس خبریں گردش کررہی ہیں کہ بلاول بھٹو کی پشاور میں ہونے والے پی ڈی ایم کے جلسے کے بعد سے طبعیت ناساز ہے کورونا آثار نمایاں ہیں اگلے 14 روز وہ قرنطینہ میں گزاریں گے شائد ہمشیرہ کی منگنی میں بھی پرسوں شریک نہ ہوں۔

 


  • Featured Content⭐


    24 گھنٹوں کے دوران 🔥


    From Our Blogs in last 24 hours 🔥


    >