اپوزیشن لیڈر شہباز شریف کی اہلیہ، بچے اور داماد اشتہاری قرار

لاہور کی احتساب عدالت میں منی لانڈرنگ ریفرنس میں نامزد اپوزیشن لیڈر قومی اسمبلی شہباز شریف اور حمزہ شہباز کو عدالت کے روبرو پیش کیا گیا، عدالت نے شہباز شریف کی اہلیہ نصرت شہباز، بچوں سلیمان شہباز، رابعہ عمران اور داماد سمیت 6 ملزمان کو اشتہاری قرار دے دیا۔

ریفرنس پر احتساب عدالت کے ایڈمن جج جواد الحسن نے سماعت کی، دوران سماعت فاضل جج نے شہباز شریف کی والدہ کے انتقال پر افسوس کا اظہار کیا۔ اس موقع پر نیب پراسکیوٹر نے بھی حمزہ شہباز اور شہباز شریف سے افسوس کا اظہار کیا اور مرحومہ کے درجات کی بلندی کے لیے دعا کی۔

عدالت نے نیب کے 3 گواہوں کے بیان قلمبند کیے اور آئندہ سماعت پر مزید گواہوں کو طلب کرلیا۔ حمزہ شہباز نے سماعت کے دوران فاضل جج کا بہتر اور مناسب گاڑی فراہم کرنے پر شکریہ ادا کیا۔

واضح رہے کہ احتساب عدالت کی جانب سے اپوزیشن لیڈر قومی اسمبلی شہباز شریف اور اپوزیشن لیڈر پنجاب اسمبلی حمزہ شہباز پر پہلے ہی فرد جرم عائد کی جا چکی ہے۔ جب فرد جرم عائد کی گئی تھی تو شہباز شریف نے صحت جرم سے انکار کیا اور کہا تھا کہ نیب کو سیاسی انجینئرنگ کے لئے استعمال کیا جا رہا ہے، نیب اپنی ساکھ کھوچکا، قیامت تک بھی کرپشن کے الزامات ثابت ہوگئے تو قوم کا قرض دار ہوں گا۔

شہباز شریف نے ایک بار پھر جیل میں طبی سہولیات نہ ملنے کا الزام لگایا اور کہا کہ سونے کے لئے بیڈ نہیں دیا گیا۔

  • نواز شریف کے
    شاگرد ابہ بھی موجود
    آرڈیننس میں جہل سازی
    ڈپٹی رجسٹرار عدنان کریم اور لیگل ایڈوائزر
    کا عظیم کارنامہ ایک کلاز کو تہس نس اور اسی
    جگہ اپنی مرضی سے ایک کلاز لکھ دیا گیا


  • Featured Content⭐


    24 گھنٹوں کے دوران 🔥


    From Our Blogs in last 24 hours 🔥


    >