نافرمان اولادبوڑھے والدین کو گھر سے بیدخل نہیں کرسکے گی

نافرمان اولاد کو گھر سے بے دخل کرنے کا حق والدین کو دینے کی تجویز منظور

وفاقی حکومت نےوالدین وک نافرمان اولاد کے آگے بے بس اور لاچار ہونے سے بچانے کا بیڑہ اٹھالیا، والدین کے حقوق کے تحفظ کے لیے آرڈیننس لانے کا فیصلہ کرلیا گیا ہے،جس کے تحت نافرمان اولاد اپنے والدین کو کسی بھی صورت میں گھر سے نہیں نکال سکے گی۔

وزیراعظم عمران خان نے بچوں کو گھر سے بے دخل کرنے کا حق والدین کو دینے کی تجویز منظور کرلی ہے،وزیراعظم نے فوری آرڈیننس کا مسودہ تیار کرنے کی ہدایت کردی، وزارت قانون نے اس سلسلے میں آرڈیننس جاری کرنے کا عندیہ دیتے ہوئے کہا کہ آرڈیننس میں بچوں کے ساتھ رہنے والے والدین کے حقوق کا تحفظ یقینی بنایا جائے گا، حکومت معاشرے کے کمزور طبقات کی مدد کے لئے ہر ممکن کوشش کر رہی ہے۔۔۔

وزیر اعظم عمران خان سے وزیر قانون فروغ نسیم نے ملاقات کی، جس میں بچوں کو گھر سے بے دخل کرنے کا حق والدین کو دینے کا آرڈیننس جاری کرنے کی تجویز پر تبادلہ خیال کیا گیا۔

وزیر قانون نے وزیراعظم کو بتایا کہ آرڈیننس میں تین چیزوں پر توجہ دی جانی چایئے، اگر مکانات بچوں کے زیر ملکیت ہیں تو بچوں کو والدین کو گھروں سے بے دخل کرنے سے روکا جا سکے۔

اگر مکانات والدین کی ملکیت ہیں، تو والدین کو یہ حق حاصل ہونا چاہئے کہ وہ بچوں اور ان کی شریک حیات کو آسان طریقہ کار، یعنی پولیس یا ضلعی انتظامیہ کی مداخلت کے ذریعے 10 دن کے اندر اندر بے دخل کر سکیں اور اگر مکانات والدین یا دادا کے فنڈ سے تعمیر کیے گئے تھے ، اور بچوں کے نام تھے تو ، والدین کو ان کی زندگی تک کچھ سہولت فراہم کی جا سکے،

ترجمان وزارت قانون کا کہنا ہےکہ آرڈیننس کے تحت والدین بچوں اور ان کے شریک حیات کو گھر سے بے دخل کر سکیں گے، ان والدین کے حقوق کا تحفظ ہو سکے گا جو اپنے بچوں کے ساتھ رہتے ہیں۔


  • Featured Content⭐


    24 گھنٹوں کے دوران 🔥


    From Our Blogs in last 24 hours 🔥


    >