ہتک عزت کیس:طلبی کے باوجود عدالت پیش ہوئے بنامیشا شفیع پاکستان آ کر واپس روانہ

ہراسانی کیس:طلبی کے باوجود عدالت پیش ہوئے بنامیشا شفیع پاکستان آ کر واپس روانہ

علی ظفر ہتک عزت کیس: میشا شفیع پاکستان میں گانے کی ریکارڈنگ کروا کر عدالت پیش ہوئے بغیر کینیڈا واپس لوٹ گئیں۔

میڈیا رپورٹس کے مطابق گلوکارہ و اداکارہ میشا شفیع نے عدالتی احکامات ہوا میں اڑا دیئے ہیں، عدالت کی جانب سے بار بار طلبی کے باوجود گلوکارہ و اداکارہ علی ظفر ہتک عزت کیس میں عدالت میں پیش نہ ہوئیں مگر گانے کی ریکارڈنگ کروانے کے لیے پاکستان آ گئیں۔

میشا شفیع کینیڈا سے پاکستان پہنچ کر کراچی اور لاہور کے میوزک سٹوڈیوز میں دو گانے ریکارڈ کرانے کے بعد دو روز پہلے واپس کینیڈا چلی گئی لیکن عدالت کے طلبی کے نوٹس کے باوجود میں میشا شفیع کو عدالت میں پیش ہونا مناسب نہیں لگا، سماجی رابطوں کی ویب سائٹس پر بھی میشا شفیع کے عدالت میں پیش نہ ہونے کی وجہ سے سوشل میڈیا صارفین کی جانب سے شدید رد عمل کا اظہار کیا جا رہا ہے۔

 

خیال رہے کہ لاہور کی  عدالت نے علی ظفر ہتک عزت کیس میں میشا شفیع اور دیگر گواہان کو بیان ریکارڈ کروانے کے لیے طلب کیا تھا، عدالت نے میشا شفیع اور دیگر گواہان کو 27 اکتوبر، 7 نومبر، 14 نومبر ، 16 نومبر ، 23 نومبر اور 30 نومبر کو بھی طلبی کے سمن جاری کیے  لیکن میشاشفیع سمیت کوئی گواہ عدالت میں پیش نہ ہوا۔

میشا شفیع نے گزشتہ سال دسمبر میں اپنا آخری بیان عدالت میں ریکارڈ کروایا تھا، تاہم گزشتہ ایک سال سے میشا شفیع کی کہ غیر حاضری کی وجہ سے میشا شفیع کے بیان پر جرح التوا کا شکار ہے، میشا شفیع کے وکیل نے عدالت سے استدعا کی تھی کہ میشا شفیع کا بیان فون پر ریکارڈ کر لیا جائے لیکن عدالت نے میشا شفیع کے وکیل کی استدعا مسترد کر دی تھی۔

دوسری جانب الزامات کا سامنا کرنے والے علی ظفر نے میشا شفیع کے کینیڈا سے پاکستان آنے تک کے تمام سفری اخراجات اٹھانے کی بھی پیشکش کی تھی، علی ظفر کی جانب سے کینیڈا سے پاکستان آنے تک کے تمام سفری اخراجات اٹھانے کی پیشکش کے باوجود میشا شفیع نا پاکستان آئی اور نہ ہی عدالت میں پیش ہوئی بلکہ رواں ماہ وہ پاکستان آکر دو سٹوڈیوز میں گانے کی ریکارڈنگ کروا کر واپس چلی گئی۔


  • Featured Content⭐


    24 گھنٹوں کے دوران 🔥


    From Our Blogs in last 24 hours 🔥


    >