کورونا کے بعد 500 سے زائد جاپانی آئی ٹی کمپنیاں پاکستان آنا چاہتی ہیں،جاپانی وزارت تجارت

کورونا کے بعد 500 سے زائد جاپانی آئی ٹی کمپنیاں پاکستان آنا چاہتی ہیں،جاپانی وزارت تجارت

گزشتہ روز جاپانی سفیر نے وزیراعظم عمران خان کے معاون خصوصی برائے اوورسیز پاکستانیز ذوالفقار بخاری سے ملاقات کی، ملاقات کے بعد معاون خصوصی برائے اوورسیز پاکستانیز ذوالفقار بخاری نے جاپانی آئی ٹی کمپنیز کی ایسوسی ایشن سے ویڈیو کانفرنس سے بھی خطاب کیا۔ کانفرنس میں دونوں ممالک کے سفارتی نمائندگان سمیت  وزارت خارجہ، وزارت انفارمیشن ٹیکنالوجی، پاکستان سافٹ ویئر ہاؤس ایسوسی ایشن نے خصوصی شرکت کی۔

جاپانی آئی ٹیز کمپنیز کی خصوصی شرکت کی کانفرنس کے موقع پر جاپان میں تعینات پاکستانی سفیر کا کہنا تھا کہ پاک جاپان سکلڈ ورک فورس معاہدے کے بعد پاکستانی سفارت خانے سے این ای سی، میک، سینکیو، اورکس سمیت جاپان کی ایک سو سے زائد بڑی آئی ٹی کمپنیوں نے رابطہ کیا ہے، جو پاکستان آنا چاہتی ہیں۔

اس موقع پر جاپان آئی ٹی ایسوسی ایشن کا کہنا تھا کہ جاپان میں آئی ٹی انجینئرز کی شدید قلت پیدا ہو رہی ہے، جس کی وجہ سے 2030 تک جاپان کو تقریبا آٹھ لاکھ آئی ٹی انجینئرز کی کمی کا سامنا کرنا پڑے گا، تاہم کرونا وائرس کی موجودہ وبا کے بعد جاپان کی پانچ سو سے زائد آئی ٹی کمپنیاں پاکستان جانا چاہتی ہیں اور وہاں اربوں ڈالر کی سرمایہ کاری کرنا چاہتی ہیں۔

وزیراعظم کے معاون خصوصی برائے اوورسیز پاکستانیز ذوالفقار بخاری کا ویڈیو کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے کہنا تھا کہ 2021 میں پاکستان نئے ویژن کے تحت پاکستانی افرادی قوت کی ایکسپورٹ کا دائرہ کار میں وسیع کر رہا ہے، ماضی میں صرف خلیجی ممالک کی طرف ہی توجہ دی گئی ہے لیکن اب ساؤتھ کوریا، رومانیہ، جرمنی اور جاپان کے ساتھ ہنرمند افرادی قوت بڑھانے کے لئے مسلسل رابطے میں ہیں جب کہ جاپان میں افرادی قوت کو بھیجنا پاکستان کی اولین ترجیح ہے۔  خلیجی ممالک کے بعد جاپان پاکستانیوں کے لئے دوسری بڑی مارکیٹ بنے گی۔

 

زلفی بخاری کا کہنا تھا کہ 2021ء میں پاک جاپان تعلقات کا ایک نیا باب شروع ہو گا اور 2021 کی شروع میں ہی میں جاپان کا ایک اہم دورہ کروں گا جس کا مقصد جاپان میں پاکستانی آئی ٹی انجینئرز کے لیے راہ ہموار کرنا ہے، یہاں یہ بات بہت حوصلہ افزا ہے کہ جاپانی کمپنیاں پاکستان میں آئی ٹی کے تربیتی مراکز قائم کرنا چاہتی ہیں، اس کے علاوہ بہت جلد پاکستان میں پاک جاپان آئی ٹی کانفرنس کا انعقاد بھی کیا جائے گا۔

  • […] In a meeting with Special Assistant to Prime Minister (SAPM) on Overseas Pakistanis and Human Resource Development Zulfikar Bukhari, the Japanese envoy explained that Japan was running out of skilled IT workers for its top companies. In fact, the country expects to face a severe shortage of 800,000 IT engineers by 2030. […]


  • Featured Content⭐


    24 گھنٹوں کے دوران 🔥


    From Our Blogs in last 24 hours 🔥


    >