پاکستان چار سے چھ ماہ میں ایکسرے اور ڈائیلائسز مشینیں تیار کر لے گا،فواد چودھری

پاکستان چار سے چھ ماہ میں ایکسرے اور ڈائیلائسز مشینیں تیار کر لے گا، وزیر سائنس اینڈ ٹیکنالوجی فواد چوہدری

خبر رساں ادارے کی رپورٹ کے مطابق وفاقی وزیر برائے سائنس اینڈ ٹیکنالوجی فواد چودھری کا بدھ کو یہاں قائد اعظم یونیورسٹی اسلام آباد میں پائیدار ترقیاتی اہداف (ایس ڈی جی) وال کی افتتاحی تقریب سے خطاب کرتے ہوئے کہنا تھا کہ پاکستان چار سے چھ ماہ میں ایکسرے اور ڈائیلاسز مشینیں تیار کرے گا۔

وفاقی وزیر کا افتتاحی تقریب سے خطاب کرتے ہوئے کہنا تھا کہ صحت کے شعبے میں پاکستان خود کفیل ہو رہا ہے، ہم پہلے تھرمامیٹر نہیں بناتے تھے، آج وینٹی لیٹرز بنا رہے ہیں، انہوں نے کہا کہ واٹس ایپ کی نئی پالیسی کے حوالے سے بھی ایک مسودہ بھی تیار کرلیا گیا ہے جو بہت جلد کابینہ کو بھجوایا جائے گا۔

فواد چوہدری کا کہنا تھا کہ ملک کی ٹرانسپورٹ کو بجلی پر منتقل کرنے کے لئے ہماری وزارت "فور وہیلرز الیکٹرک وہیکلز پالیسی” لا رہی ہے، جس سے ملکی ٹرانسپورٹ کو بجلی پر منتقل کر دیا جائے گا جبکہ الیکٹرک وہیکلز کی مرمت کے لیے لوگوں کو خصوصی تربیت بھی دی جائے گی، ہمیں اس وقت مستقبل کی جاب مارکیٹ کے مطابق یونیورسٹی کے نوجوانوں کو تربیت دینا ہو گی۔

انہوں نے کہا کہ امریکا سمیت دنیا بھر میں تبدیلی یونیورسٹیاں ہی لے کر آئی ہیں اور کسی بھی معاشرے اور ملک کی تعمیر و ترقی میں اس کی یونیورسٹیوں کا بہت اہم کردار رہا ہے، اسی سلسلے میں کوشش ہے کہ سرکاری سکولوں کو سب سے زیادہ اسکالرشپس دے سکیں۔

وفاقی وزیر کا کہنا تھا کہ ہماری رواں سال پوری کوشش ہوگی کہ مستحق اور ذہین طلباء کو زیادہ سے زیادہ سکالر شپس دیں، ہماری پوری  کوشش ہو گی کہ سرکاری سکولوں کو نویں سے بارہویں تک سکالرشپ دیں، میٹرک میں ٹاپ کرنے والوں کو 10 ہزار، انٹر میں ٹاپ کرنے والوں کو 12 ہزار جبکہ ریاضی میں ٹاپ کرنے والوں کو الگ سے سکالرشپ دیں گے۔


  • Featured Content⭐


    24 گھنٹوں کے دوران 🔥


    From Our Blogs in last 24 hours 🔥


    >