لاہور ہائی کورٹ نے پنجاب پولیس کو "منشا بم” کی گرفتاری سے روک دیا

عدالت نے پنجاب پولیس کو "منشا بم" کی گرفتاری سے روک دیا

تفصیلات کے مطابق لاہور ہائی کورٹ میں پیر کے روز قبضہ اراضی کیس کی سماعت ہوئی، جس میں عدالت نے "منشا بم” کی عبوری ضمانت منظور کرتے ہوئے پولیس کو ملک منشا کھوکھر کو 21 جنوری تک گرفتار کرنے سے روک دیا ہے۔

میڈیا رپورٹس کے مطابق ملک منشا کھوکھر عرف "منشا بم” پر زمینوں پر قبضہ کرنے سمیت  لاہور کے گرین ٹاؤن تھانے میں متعدد مقدمات درج ہیں، جس پر ملزم کو گرفتار کرنے کے لیے پولیس کی جانب سے چھاپے بھی مارے گئے تھے تاہم ملزم بچ نکلا۔

یہاں یہ امر قابل ذکر ہے کہ منشا بم کو سپریم کورٹ کے احاطے سے پہلے بھی گرفتار کیا گیا تھا، جب وہ 15 اکتوبر 2018 کو حفاظتی ضمانت کے حصول کے لئے وہاں پہنچا تھا، تاہم اب یہ اطلاع ملی ہے کہ اس نے خود کو اعلی عدالت کے حوالے کر دیا ہے۔

پولیس کی جانب سے ایک کیس کی سماعت کے دوران سپریم کورٹ کو بتایا گیا تھا کہ منشا بم جوہر ٹاؤن لاہور میں اراضی پر قبضہ کرنے والے بد نام زمانہ قبضہ گروپ کا سربراہ ہے، جس پر پولیس اس کی گرفتاری کے لئے کوششیں کر رہی تھی، لیکن وہ روپوش ہو گیا تھا۔

ایک پولیس اہلکار نے عدالت کو بتایا تھا کہ منشا بم اور اس کے بیٹے جوہر ٹاؤن میں زمینوں پر قبضہ کرنے میں ملوث ہیں۔ انہوں نے مزید کہا کہ زمینوں پر قبضہ کرنے والے اس گروپ کے خلاف 70 سے زیادہ مقدمات درج ہیں۔


  • Featured Content⭐


    24 گھنٹوں کے دوران 🔥


    From Our Blogs in last 24 hours 🔥


    >