آمدن سے زائد اثاثہ جات کیس : نیب کی چودھری بردارن کے خلاف انکوائری بند

قومی احتساب بیورو نے چودھری بردارن کے خلاف انکوائری بند کر دی، نیب پراسیکیوٹر کا عدالت میں بیان

لاہور ہائیکورٹ میں چیئرمین نیب کے اختیارات سے متعلق چودھری برادران کی درخواست پر جسٹس صداقت علی خان کی سربراہی میں 2 رکنی بینچ نے سماعت کی، دوران سماعت نیب پراسیکیوٹر نے بتایا کہ قومی احتساب بیورو نے چودھری برادارن کے خلاف انکوائری بند کر دی ہے، جس پر عدالت نے درخواستیں غیر مؤثر ہونے پر نمٹا دیں۔

چودھری شجاعت حسین اور چودھری پرویز الہٰی نے چیئرمین نیب کے اختیارات سے متعلق عدالت میں دراخوست دائر کر رکھی تھی جس میں انہوں نے مؤقف اپنایا تھا کہ نیب سیاسی انجینئرنگ کرنے والا ادارہ ہے۔ نیب کے کردار اور تحقیقات کے خلاف عدالتیں فیصلے بھی دے چکی ہیں۔ ہمارا سیاسی خاندان ہے اور ہمیں سیاسی انتقام کا نشانہ بنایا جاتا رہا ہے۔

یاد رہے کہ نیب نے 20 سال قبل چودھری برداران کے آمدن سے زائد اثاثہ جات کی تحقیقات کیں جس میں نیب ناکام ہوا جس پر چیئرمین نیب جسٹس(ر) جاوید اقبال نے ایک بار پھر ان کی تحقیقات کا حکم دیا تھا۔

چودھری برادران نے اپنی درخواست میں استدعا کی تھی کہ نیب کو 20 سال پرانی انکوائری بند کرنے کا کہاجائے کیونکہ چیئرمین نیب کو یہ انکوائری دوبارہ کھولنے کا اختیار نہیں، نیب کی جانب سے ہی بند کی گئی انکوائری کو اپ گریڈ کرنا غیر قانونی ہے لہٰذا عدالت اس پر حکم صادر فرمائے۔

اس درخواست پر آج ہونے والی سماعت کے دوران نیب پراسیکیوٹر نے عدالت کو بتایا کہ نیب کی جانب سے اس انکوائری کو بند کر دیا گیا ہے جس پر عدالت نے چودھری برادران کی درخواستیں غیر مؤثر ہونے پر نمٹا دیں۔

اسپیکر پنجاب اسمبلی چودھری پرویز الہٰی اور سابق ڈپٹی وزیراعظم چودھری شجاعت حسین کی جانب سے وکیل امجد پرویز عدالت میں پیش ہوئے جن کے سامنے باضابطہ طور پر عدالت کو نئی کارروائی سےمتعلق آگاہ کیا گیا۔


  • Featured Content⭐


    24 گھنٹوں کے دوران 🔥


    From Our Blogs in last 24 hours 🔥


    >