فیصل آباد : پولیس اہلکاروں نے وقاص کو گاڑی سے نکال کر گولی ماری، پولیس رپورٹ

فیصل آباد کے علاقے ڈجکوٹ میں پٹرولنگ پر نکلنے والی پولیس موبائل نے کار سوار پر اندھا دھند فائرنگ کی جس کے نتیجے میں وقاص جاں بحق جبکہ دیگر3 ساتھی زخمی ہو گئے تھے۔ واقعہ سے متعلق مقتول کے اہلخانہ کا کہنا ہے کہ پولیس نے پیچھے سے فائرنگ کی اور بعد میں لاش کو غائب کر دیا۔

مقتول کے لواحقین کی جانب سے واقعہ کے خلاف احتجاج کیا گیا اور اس پر جوڈیشل انکوائری کا مطالبہ کیا گیا تاہم اس واقعے سے متعلق پولیس کی اپنی انکوائری رپورٹ آ گئی ہے۔

پولیس کے مطابق واقعے کا مقدمہ مقتول کے بھائی کی مدعیت میں 4 اہلکاروں کے خلاف تھانہ ڈجکوٹ میں درج کرلیا گیا ہے اور ان چاروں پولیس اہلکاروں کو گرفتار کر لیا گیا ہے۔ جبکہ اب تک کی تفتیشی رپورٹ کے مطابق ناکے پرگاڑی نہ رکنے پر اہلکاروں نے وقاص احمد پر فائرنگ کی، وقاص احمد کی کار کا ٹائر اے ایس آئی شاہد رسول کے پاؤں پر چڑھ گیا تھا جس پر اہلکاروں نے مشتعل ہو کربندوقیں تان لیں۔

پولیس اہلکاروں نے بندوقیں تانی تو وقاص نے خوفزدہ ہوکرگاڑی دوڑا دی۔ جس کے بعد اہلکاروں نے پیچھا کر کے کار روکی اور وقاص کو نکال کر گولی ماری۔

اس واقعہ پر اس سے قبل پولیس کا کہنا تھا کہ ناکے پر موجود پولیس اہلکاروں نے گاڑی کو مشکوک جان کر روکنے کی کوشش کی تو کارسواروں نے رکنے کے بجائے گاڑی بھگا دی جس پر اہلکاروں کی فائرنگ سے ایک کار سوار جاں بحق جب کہ تین افراد زخمی ہو گئے۔

پولیس ترجمان نے یہ بھی موقف دیا تھا کہ گاڑی کا تعاقب کیا گیا، گاڑی میں موجود تمام افراد نے شراب پی رکھی تھی، فائرنگ کے نتیجے میں جاں بحق ہونے والا نوجوان وقاص بھی نشے میں دھت تھا۔

  • کوئی بڑی بات نہیں ان علاقوں کی پولیس انتہائی کرپٹ رشوت خور بد دیانت بے ایمان ہے
    اور یہاں کے افیسر بھی اسی طرح کی چ ولیں ہیں


  • Featured Content⭐


    24 گھنٹوں کے دوران 🔥


    From Our Blogs in last 24 hours 🔥


    >