امریکی صدر جو بائیڈن نے حلف اٹھاتے ہی مسلم ممالک پر عائد اہم پابندی ختم کر دی

نومنتخب امریکی صدر جو بائیڈن نے کرسی صدارت سنبھالتے ہیں ڈونلڈ ٹرمپ کی کئی متعصب پالیسیوں کو منسوخ کر کے 17 نئے صدارتی حکم ناموں پر دستخط کیے ہیں جن میں امریکا کی جانب سے کئی مسلم ممالک پر عائد سفری پابندیوں کا حکم نامہ بھی شامل ہے جسے اب ختم کر دیا گیا ہے۔

صدارتی حکم نامے کے مطابق بعض مسلم ممالک کے شہریوں کی امریکا میں داخلے پر عائد پابندی کو ختم کردیا گیا ہے، اس کے ساتھ ہی امریکہ اور ان مسلم ممالک کے درمیان ایک نئے دور کا آغاز ہونے کی امید پیدا ہوئی ہے۔

امریکی صدر کے ایگزیکٹو آرڈر کے تحت امریکا ماحولیاتی تحفظ سے متعلق پیرس معاہدے میں دوبارہ شامل ہوگیا ہے، اقوام متحدہ نے امریکا کے پیرس معاہدے میں دوبارہ شمولیت کا خیر مقدم کیا ہے۔

جوبائیڈن نے امریکا کےڈبلیوایچ او میں دوبارہ شمولیت کے حکم نامے پر بھی دستخط کئے اور میکسیکو سے متصل سرحد پر دیوار کا تعمیراتی کام معطل کردیا گیا ہے، امریکی صدر نے انتخابی مہم کے دوران اس منصوبے کو رقم کا ضیاع قرار دیا تھا اور کہا تھا کہ اس کی وجہ سے اصل خطرات سے نمٹنے کے لیے درکار وسائل کا رخ موڑا گیا ہے۔

نئے صدر کی جانب سے امریکا میں وفاقی املاک پر ماسک پہننا لازمی قرار دے دیا گیا ہے اور آرکٹک ریجن میں تیل وگیس کی دریافت سےمتعلق لیز منسوخ کردی گئیں ہیں۔

صدر جو بائیڈن اور نائب صدر کملا ہیرس کے حلف اٹھانے کے بعد کئی ممالک کی جانب سے نئی قیادت کو بھرپور خوش آمدید کہا گیا ہے اور خیال کیا جا رہا ہے کہ نئی امریکی قیادت دنیا بھر کے ساتھ خوشگوار تعلقات استوار کرے گی۔


Featured Content⭐


24 گھنٹوں کے دوران 🔥


From Our Blogs in last 24 hours 🔥


>