وزیراعظم کے فارن فنڈنگ کیس کی اوپن سماعت کے مطالبے پر الیکشن کمیشن کا ردعمل

فارن فنڈنگ جیسے اہم اور حساس معاملے کی سماعت عوامی سطح پر نہیں ہو سکتی، الیکشن کمیشن

الیکشن کمیشن آف پاکستان کی جانب سے فارن فنڈنگ کیس پر اعلامیہ جاری کیا گیا ہے، جس میں الیکشن کمیشن نے کی جانب سے کہا گیا ہے کہ سکروٹنی کمیٹی کی جانب سے غیر جانبدارانہ کارروائی کی جا رہی ہے، لہذا استدعا ہے کہ غیر ضروری تبصروں سے گریز کیا جائے۔

الیکشن کمیشن آف پاکستان نے اعلامیہ میں کہا ہے کہ فارن فنڈنگ کا معاملہ بہت ہی حساس ہے، جس کا میرٹ پر فیصلہ ہونا قومی مفاد میں ہے، کیس کی سماعت پہلے ہی فریقین کے سامنے ہیں لیکن کمیشن میں ہو رہی ہے جبکہ دوران سماعت میڈیا سمیت متعلقہ شخصیات اور ادارے وہاں پر موجود ہوتے ہیں۔

الیکشن کمیشن نے اعلامیے میں کہا ہے کہ الیکشن کمیشن کی سکروٹنی کمیٹی کا منظر اور اختیارات جوائنٹ انویسٹی گیشن ٹیم (جے آئی ٹی) کے ہیں، جس کی تمام تر کارروائی خفیہ ہوتی ہے لہذا فارن فنڈنگ کیس کی سماعت عوامی سطح پر نہیں ہو سکتی کیوں کہ اس سے سکروٹنی کمیٹی کو اپنی کارروائی میں مشکلات کا سامنا کرنا پڑ سکتا ہے۔

اعلامیہ میں مزید کہا گیا ہے کہ سکروٹنی کمیٹی اپنی جامع سفارشات مرتب کر کے کمیشن کو پیش کرے گی اور کمیشن یہ سفارشات کھلی سماعت میں دونوں پارٹیوں کو مہیا کرے گا، بعدازاں الیکشن کمیشن دونوں اطراف کی بحث سننے کے بعد بغیر کسی دباؤ کے میرٹ پر جلد از جلد فیصلہ کرے گا۔

  • او بھائی دودھ کا دودھ پانی کا پانی کرو عوام کو بتاؤ کہ ھر پارٹی کے اکاؤنٹس میں پیسے آئے ہیں ان کا سورس کیا ھے عوام کو ھر پارٹی کی فنڈنگ کے ذرائع کھول کر بتائیں تاکہ میڈیا کا اور پی ڈی ایم کا رنڈی رونا دھونا ختم ہو جو بیشرم بیغرت دن رات فارن فنڈنگ فارن فنڈنگ کا رنڈی رونا دھونا چوبیس گھنٹے عوام کا دماغ پک گیا ھے

  • جیسے براڈ شیٹ کے معاملے پر عظمت سعید کو نامزد کر کے پاک ہونا چاہتے ہیں ایسے ہی فارن فنڈنگ کیس کو خفیہ رکھ کر نشئی وزیر اعظم کو ریلیف دینا چاہتے ہیں ویسے بھی موجودہ حکومت میں انصاف کی توقع رکھنا بیوقوفی ہے


  • Featured Content⭐


    24 گھنٹوں کے دوران 🔥


    From Our Blogs in last 24 hours 🔥


    >