پاکستان فوجی ٹینک بنا رہا ہے لیکن کاریں بنانے کے قابل نہیں ہوا:وفاقی وزیر فواد چوہدری

وفاقی وزیرسائنس اینڈ ٹیکنالوجی فواد چوہدری کا کہنا ہے کہ پاکستان فوجی ٹینک بنا رہا ہے لیکن کاریں بنانے کے قابل نہیں ہوا،راولپنڈی میں بارانی انسٹی ٹیوٹ آف انفارمیشن ٹیکنالوجی میں خطاب کرتے ہوئے کہا کہ پی ٹی آئی حکومت کے دور میں سول ملٹری تعلقات بہتر ہوئے ہیں، اس لیے حکومت فوج کی مدد سے ڈرونز تیار کرنے پر غور کر رہی ہے،

جدید دنیا کی بنیاد سیاستدانوں یا کلرکوں نے نہیں بلکہ یونیورسٹیوں نے رکھی ہے اور ماضی سے سیکھنے کے علاوہ منطق اور دلیل ہی ترقی کی بنیاد ہے،پاکستان دنیا سے بہت پیچھے ہے، انڈسٹریل بائیو ٹیکنالوجی اور ایگری کلچرل ٹیکنالوجی کے استعمال پر زور دیتے ہوئے انہوں نے کہا کہ گاجریں اور مولیاں بیچنے پر اکتفا نہیں کیا جا سکتا بلکہ زراعت کو جدید خطوط پر استوار کرنا ہو گا۔

وفاقی وزیرسائنس اینڈ ٹیکنالوجی فواد چوہدری نے برقی گاڑیوں کیلئے پالیسی کے کامیاب نفاذ کے طریقہ کار کو جلد حتمی شکل دینے کی امید ظاہر کردی، فواد چوہدری نے کہا کہ حکومت معیشت کو فروغ دینے، آلودگی کی سطح کم کرنے اور ٹرانسپورٹ کے شعبے میں روزگار پیدا کرنے کے لئے جلد ہی اقدام اٹھائے گی،نجی ٹی وی سے گفتگو میں بتایا کہ کہ برقی گاڑیوں کے اجرا میں تاخیر ہوئی لیکن امید ہے جلد ہی اس کے اجرا کا حتمی فیصلہ ہو جائے گا۔

فواد چوہدری نے کہا کہ برقی گاڑیوں کے منصوبے کی تجاویز منظوری کے لئے جلد صدر مملکت عارف علوی کو پیش کرینگے،چار پہیوں کے لئے الیکٹرک وہیکلز پالیسی میں گاڑیوں کی درآمد، برآمد، ٹیکس، رجسٹریشن اور کسٹم ڈیوٹی سے متعلق متعدد نئے قوانین بنائے گئے ہیں،

عوام اس نئی پالیسی کے تحت ٹرانسپورٹ کی سستی سہولیات سے فائدہ اٹھا سکیں گے کیونکہ حکومت ملک میں الیکٹرک وہیکلز کو فروغ دے رہی ہے،الیکٹرک وہیکلز پالیسی پاکستان میں بڑی تبدیلی لانے میں اہم کردار ادا کرے گی جبکہ روایتی گاڑیوں کو الیکٹرک گاڑیوں میں تبدیل کرنے سے ماحولیات کو فائدہ ہو گا،اس طرح گاڑیوں کی قیمتیں بھی کم ہونگی۔

  • Government ne cars nahin banani , private sector ko agay ana hoga. Hamare billionaires sare yaa to plots bech rahay hen ya cheeni aur baaki ya to bureaucrates hain , generals ya phir politicians.

    malik riaz ya doosre billionaires ko approach kerein , chinese kisi bhi auto company se collaboration ki darlhwast kerein aur manpower to train kerein manufacturing ke liye. Assembling to pakistan mein ho rahee hai aur hopefully pakistan mein training ke baad automanufactiring start ho sakti he aglay 5 saalon mein

  • ڈبو جب اقتدار میں ہوں تو ملک نیازی جیسے مجسمے بنا سکے گا۔
    تمہارے اور نیازی جیسے اقتدار میں ہوں تو پھر جنرل نیازی جیسے ریکارڈ بنیں گے۔

  • Has any one noticed not a single question about the contents of minister’s speech.
    Shows that our journalists are illeterate and apart from politics have no knowledge or skills to ask searching questions. I wish the minister should have refused to answer any question that was not related to his speech


  • Featured Content⭐


    24 گھنٹوں کے دوران 🔥


    From Our Blogs in last 24 hours 🔥


    >