پاکستان نے ملائشیا میں طیارہ روکنے والی کمپنی کو لاکھوں ڈالر کی ادائیگی کر دی

ملائیشیا کے درالحکومت کوالالمپور میں15 جنوری کو پی آئی اے کا ایک طیارہ عدالتی حکم پر شارٹ لیزنگ کی وجہ سے ضبط کیا گیا تھا۔ اس معاملے پر برطانوی ہائیکورٹ میں سماعت ہوئی جس کے دوران پتہ چلا کہ پی آئی اے نے اس لیزنگ کمپنی کو 7 ملین ڈالر ادا کر دیئے ہیں۔

ایئر لائن کے وکیل ایرن ہچنس نے جج سے سماعت ملتوی کرنے کیلئے آن لائن درخواست کی تاکہ فریقین کرایہ ، سود ، لیز اور ادائیگی کے معاملات طے کرلیں۔ ایرن ہچنس نے عدالت کو بتایا کہ ان کا مؤقف یہ ہے کہ مدعا علیہ (پی آئی اے) نے آج رقم ادا کر دی ہے۔

سماعت میں فریقین کے وکلا نے اتفاق کیا ہے کہ پوری رقم کی ادائیگی پی آئی اے کے خلاف کسی حکم کے اجرا کے بغیر ہونی چاہیے۔ طیارہ لیز پر دینے والی کمپنی کے وکیل نے عدالت کو بتایا کہ پی آئی اے کی طرف سے 5 لاکھ 80 ہزار ڈالر ادا نہ کرنے پر عدالت آنا پڑا۔

پی آئی اے کے وکیل نے عدالت میں استدعا کی کہ کورونا وبا کے بعد انڈسٹری کی زبوں حالی پر ’اوور ہیڈ‘ چارجز کم کیے جائیں۔ وکیل نے بتایا کہ پی آئی اے نے جولائی میں اپنے دعوے میں ترمیم کا مطالبہ کرنے کے بعد سے ادائیگی نہیں کی۔

پی آئی اے طیارے کی مد میں مقروض تھا اس کا مطالبہ تسلیم نہیں کیا گیا لیکن اس نے ادائیگی نہیں کی تو قانونی چارہ جوئی شروع کردی گئی۔

  • پہلے ہی کر دیتے تو نہ پاکستان کی بے عزتی ہوتی اور نہ مسافر اور عملہ ذلیل ہوتا پھرتا۔ کوئی کام سیدھا نہی کرنا۔ لیزدینے والی کمپنی پر انگلینڈ میں کیس کر کے وکلا کو چار لاکھ پاؤنڈ بھی دئیے، کیس کی کمزاری دیکھتے ہوئے آؤٹ آف کورٹ سیٹلمنٹ بھی کی اور پوری رقم بھی ادا کی۔ شاباش حرام خورو

  • نیازیوں کا کام ہی یہی ہے عوام سے مہنگائی کر کے خون چوسو اور بیرون ملک ادائگیاں کرو۔
    نالائق جب حکمران بنتے ہیں تو ایسا ہی ہوتا ہے۔


  • Featured Content⭐


    24 گھنٹوں کے دوران 🔥


    From Our Blogs in last 24 hours 🔥


    >