شیخوپورہ:گینگ ریپ کیس کے گرفتار ملزمان پولیس حراست سے بھاگ گئے

شیخوپورہ: زیادتی کیس میں گرفتار ملزمان پولیس حراست سے بھاگنے میں کامیاب

میڈیا رپورٹس کے مطابق صوبہ پنجاب کے شہر شیخوپورہ میں آسیہ کومل مسیح کے ساتھ اجتماعی زیادتی کے کیس میں گرفتار ملزمان پولیس کی حراست سے فرار ہو گئے۔

زیادتی کیس کے ملزمان کے فرار ہونے کی خبر پر فوری ایکشن لیتے ہوئے ڈی پی او شیخوپورہ نے پانچوں اہلکاروں کو معطل کرنے کا حکم دیتے ہوئے ان کے خلاف مقدمہ درج کروا دیا اور فرار ملزمان کو جلد سے جلد گرفتار کرنے کی ہدایت کی۔

پولیس حکام کا اس حوالے سے کہنا تھا کہ آج جب پولیس ملزمان پرویز اور جنید کو برآمدگی کے سلسلے میں جائے وقوعہ سے واپس لا رہی تھی تو ایشر کے قریب پولیس پارٹی پر ملزمان کے ساتھیوں نے دھاوا بول دیا اور فائرنگ کرتے ہوئے ملزمان کو چھڑا کر اپنے ساتھ لے گئے۔

بعد ازاں پولیس حکام کا اس حوالے سے کہنا ہے کہ ملزمان کی گرفتاری کے لیے چھاپے مارے جارہے ہیں جلد ملزمان کو گرفتار کر لیا جائے گا اور ان تمام ملزمان کو بھی گرفتار کر لیا جائے گا جنہوں نے ملزمان کو چھڑوانے کے لیے قتل کی نیت سے پولیس پارٹی پر حملہ کیا تھا۔

واضح رہے کہ ملزموں نے 28 دسمبر کو آسیہ کومل نامی مسیحی لڑکی کو اجتماعی زیادتی کا نشانہ بنایا تھا، جس کا مقدمہ متعلقہ پولیس اسٹیشن میں درج کروایا گیا تھا۔

جس پر پولیس نے کارروائی کرتے ہوئے 14 روز قبل ڈی این اے میچ ہونے پر تین ملزمان کو گرفتار کیا تھا جو رشتے میں سگے بھائی ہیں اور چوری اور ڈکیتی جیسی سنگین وارداتوں میں ملوث رہے ہیں۔

  • ڈوگر نامی پولیس انسپکٹر خود نام سے ہی ڈکیٹ اور شرابی لگ رہا ہے بحرحال ان کو پھانسی دینی چاہئے دو تین سال کی سزا سے زیادتی جیسے جرائم کم نہیں ہونگے


  • Featured Content⭐


    24 گھنٹوں کے دوران 🔥


    From Our Blogs in last 24 hours 🔥


    >