لاہور :طالبہ کی موت اور لاش ہسپتال میں چھوڑنے کے معاملے کا ڈراپ سین

میڈیا رپورٹس کے مطابق لاہور کے نجی ٹیچنگ ہسپتال میں طالبہ کی لاش کا معاملہ حل ہو گیا ہے، لڑکی کی لاش کو ہسپتال چھوڑ کر فرار ہونے والے گرفتار ملزم اسامہ نے پولیس کو اپنا بیان ریکارڈ کروا دیا ہے۔

سی سی ٹی وی فوٹیج کی مدد سے گرفتار ہونے والے ملزمان میں اسامہ کا اپنے بیان میں کہنا تھا کہ  مقتولہ مریم کے اس کے ساتھ تعلقات تھے، مریم کی اسقاط حمل کے دوران طبیعت بگڑ گئی تھی، جسے فوری طور پر ہسپتال لایا گیا لیکن وہ دم توڑ چکی تھی۔

ملزم کا اس حوالے سے مزید کہنا تھا کہ لڑکی کی موت کے بعد وہ بہت زیادہ ڈر گیا تھا جس کی وجہ سے وہ لڑکی کی لاش کو ہسپتال میں ہی چھوڑ کر وہاں سے فرار ہو گیا تھا، تاہم پولیس کا اس حوالے سے کہنا ہے کہ لڑکی کی پوسٹ مارٹم رپورٹ کے بعد اس کیس کے مزید حقائق سامنے آئیں گے۔

خیال رہے کہ گزشتہ روز دو نوجوان لاہور کے نجی ٹیچنگ ہسپتال کی ایمرجنسی میں لڑکی کو لے کر آئے تھے، جس کی ہسپتال پہنچنے سے پہلے ہی موت واقع ہو چکی تھی، بعد ازاں لڑکی کی لاش کو ہسپتال میں چھوڑ کر دونوں نوجوان وہاں سے فرار ہو گئے تھے۔

  • اب کوئی بتائے مدرسوں کو گالی دینے والوں کو یہ اعلی تعلیم یافتہ لوگوں کا حال ہے کہ یہاں کیا ہو رہا یہ گندی حرکتیں کہیں بھی ہوں قابل مزمت ہیں اس میں مدرسہ کالج سکول کی تسخیص نہی ہونی چاہیے جھوٹ مسجد میں بھی ناجائز ہے اور مسجد سے باہر بھی ناجائز رہے گا اسی طرح یہ غلط کاریاں بے راہ رویاں ہمارے معاشرے کے لیے ہر جگہ قابل افسوس قابل مزمت ہیں


  • Featured Content⭐


    24 گھنٹوں کے دوران 🔥


    From Our Blogs in last 24 hours 🔥


    >