کینولی کیفے نے اپنا لوگو اردو میں بدل کے قومی زبان کی اہمیت تسلیم کرلی

گزشتہ دنوں سوشل میڈیا ہاٹ ایشو کا ڈراپ سین ہوگیا اور ” کینولی کیفے ” نے اپنے مونوگرام کو اردو میں تبدیل کرکے قومی زبان کی اہمیت کو تسلیم کرلیا ہے۔

"کینولی" کیفے نے اپنا لوگو اردو میں بدل کے قومی زبان کی اہمیت تسلیم کرلی

تفصیلات کے مطابق گزشتہ دنوں سوشل میڈیا پر ایک ویڈیو وائرل ہوئی جس میں اسلام آباد کے ایک نجی کیفے کی مالکن صرف ٹھیک طریقے سے انگریزی نہ بول پانے کی وجہ سے کیفے کے مینجر کو شدید تضحیک کا نشانہ بنارہی تھی۔

ویڈیو کے سوشل میڈیا پر آتے ہی یہ کچھ ہی دیر میں سوشل میڈیا کا ہاٹ ایشو بن گیا جس میں عام عوام کے علاوہ سلیبریٹیرز اور کھلاڑی بھی شامل ہوگئے، سوشل میڈیا سے نکل کر یہ احتجاج کیفے کے سامنے پہنچ گیا اور سول سوسائٹی کی جانب سے ہوٹل کے سامنے اردو اور پنجابی کا مشاعرہ منعقد کروایا گیا۔

تاہم شدید ردعمل کے بعد کینولی کیفے کی انتظامیہ نے لوگوپر اپنے نام کو جو پہلے انگریزی میں تھا اردو میں تبدیل کردیا ہے جس سے یہ پیغام دیئے جانے کی کوشش کی گئی ہے کہ کیفے انتظامیہ قومی زبان کے بجائےانگریزی زبان کو دی جانے والی حد درجہ اہمیت پر نادم ہے اور قومی زبان کی اہمیت کو سمجھتے ہوئے اپنے لوگو کو اردو میں تبدیل کررہی ہے۔

واضح رہے کہ سوشل میڈیا پر ایک ویڈیو وائرل ہوئی تھی جس میں ایلیٹ کلاس کی خواتین جو خود کو ایک ریسٹورنٹ کا مالک بتاتی ہیں وہ اس ریسٹورنٹ کے منیجر کو بلا کر اس کے ساتھ انگریزی میں بات چیت کرتی ہیں۔ جبکہ منیجر کی انگریزی اتنی اچھی نہیں ہوتی جس پر وہ اس کا مذاق بناتی ہیں اور تمسخر اڑاتے ہوئے ہنستی بھی ہیں۔

  • Yeh qaum kharri ho tu uskey elite seedhay Hotay do mint mein …… tu yeh qaum kharri ho uskey leader bhi theek hongay 2 seconds mein …… zarra num ho yeh matti tu zarkhez hay yeh saaqi !!!!!

  • سپریم کورٹ آف پاکستان نے اُردو کی ترقی اور ترویج کے لئے 8ستمبر 2015 کو ایک فیصلہ جاری کیا تھا کہ اداروں میں خط وکتابت اُردو میں کی جائے آج تک عدلیہ کے ساتھ ساتھ پاکستان کے باقی اداروں میں بھی اس کا اطلاق نہیں کیا جا رہا ھے اور عدلیہ کے تمام فیصلے انگلش میں آتے ہیں اور ایک ہفتہ میڈیا کے ساتھ ساتھ عوام بھی کنفیوژ رہتی ھے کہ کیا فیصلہ آیا ھے نہ ہی پاکستان کے آئین کو اُردو میں لکھا گیا ھے انگلش ایک کنفیوژ زبان ھے کیونکہ ایک ایک انگلش کے لفظ کے بہت سے معنے ہوتے ہیں انگریز ملکوں میں بھی کیسی بھی فیصلے کو سمجھنے کے لئے وکیلوں کا سہارا لیا جاتا ھے پاکستان میں اُردو زبان کے ساتھ حکومتی اداروں نے خود ایک مزاخ بنایا ہوا ھے جان بوجھ کر اردو زبان کو اداروں میں رائج نہیں کیا جارہا ھے تاکہ عوام تقسیم رھے مقابلے کے امتحانات میں وہ لوگ ہی پاس ہوتے ہیں جن کی انگلش اچھی ہو۔ انگلش ایک اچھی انٹرنیشنل رابطے کی زبان ھے ذہانت کی نہیں۔
    لیکن پاکستان میں انگلش کو ذہانت کا معیار سمجھا جاتا ھے آج تک دنیا کی کیسی قوم اور ملک نے دوسرے ملک کی زبان سیکھ کر ترقی نہیں کی


  • Featured Content⭐


    24 گھنٹوں کے دوران 🔥


    From Our Blogs in last 24 hours 🔥


    >