وزیراعظم کا بلین ٹری سونامی منصوبہ، بین الاقوامی شخصیات بھی معترف ہو گئیں

بلین ٹری سونامی کی تبدیل آگئی، بین االاقوامی شخصیات بھی معترف

ناروے کے سفارت کار ایرک سؤل ہائم بھی بلین ٹری سونامی منصوبے سے آنے والی حقیقی تبدیلی کے معترف ہوگئے۔

تفصیلات کے مطابق اقوام متحدہ کے انوائرمنٹ پروگرام کے سابق ایگزیکٹو ڈائریکٹر ایرک سؤل ہائم نے سماجی رابطے کی ویب سائٹ ٹویٹر پر خلا سے لی گئی پاکستان کی ایک تصویر شیئر کی جس میں 2014 اور 2020 کا تقابلی جائزہ تھا۔

جو تصویر 2014 میں لی گئی  اس میں بنجر زمین پر چھوٹے چھوٹے ہرے ہرے پودوں کے نشانات نظر آرہے تھے، جبکہ جو تصویر خلا سے 2020 میں اتاری گئی اس میں تقریبا پورا علاقہ ہرابھرا ہوچکا ہے اور زمین کسی جنگل کا منظر پیش کرتی دکھائی دے رہی ہے۔

ایرک سؤل ہائم نے تقابلی جائزہ پیش کرتے ہوئے کہا کہ” پاکستان نے کمال کردیا، پاکستان کے بلین ٹری منصوبے کے 6 سالوں میں حقیقی تبدیلی آنا شروع ہوگئی ہے”۔

بلین ٹری سونامی کی تبدیل آگئی، بین االاقوامی شخصیات بھی معترف

واضح رہے کہ اس سے قبل گزشتہ برس اپریل میں ورلڈ اکنامک فورم نے بھی وزیراعظم عمران خان کے بلین ٹری منصوبے سے متاثر ہوکر دنیا بھر میں ٹریلین ٹری منصوبے کا اعلان کیا تھا۔

ورلڈ اکنامک فورم نے وزیراعظم کے خطاب کو مہم کا حصہ بنایا تھا اور باضابطہ طور پر ایک ویڈیو پیغام جاری کیا تھا جس کے 90 فیصد حصے میں عمران خان کی تقاریر کے حصے شامل کیے گئے تھے، اسی ویڈیو میں پاکستان کے مختلف مقامات پر شجر کاری مہم کے مناظر کو بھی شامل کیا گئے تھا۔

ورلڈ اکنامک فورم کا کہنا تھا کہ دنیا بھر کو موسمیاتی تبدیلیوں کا سامنا ہے جس سے نمٹنے کیلئے ہمیں دنیا بھر میں 100 ارب درخت لگانا ہوں گے، جیسے پاکستان نے اپنے ملک میں 1 ارب درخت لگائے ہیں اسی طرح باقی دنیا بھی اس منصوبے سے فائدہ حاصل کرے اور اپنے ملکوں میں درختوں کی تعداد کو بڑھائے تاکہ دنیا کے ماحول کو درپیش مسائل سے نمٹا جاسکے۔


  • Featured Content⭐


    24 گھنٹوں کے دوران 🔥


    From Our Blogs in last 24 hours 🔥


    >