نیب کا حمزہ شہباز کو موصول ہونیوالی مشکوک ٹرانزیکشنز کا سراغ لگانے کا دعویٰ

قومی احتساب بیورو( نیب ) کو حمزہ شہباز کو موصول ہونے والی مشکوک ٹرانزیکشنز اور سرمایہ کاری کے سراغ مل گئے ہیں۔

خبررساں ادارے کی رپورٹ کے مطابق نیب نے دعویٰ کیا ہے کہ منی لانڈرنگ کیس میں حمزہ شہباز کے خلاف مزید پیش رفت سامنے آئی ہے جس میں حمزہ شہباز کو موصول ہونے والی 23 مشکوک ٹرانزیکشنز کا پتا لگالیا گیا ہے۔

نیب کے مطابق حمزہ شہباز کو ان ٹرانزیکشنز کے ذریعے181 ملین سے زائد کی رقم موصول ہوئی تھی، اور حمزہ اس رقم کے متعلق کوئی ثبوت نیب کو فراہم کرنے میں ناکام رہے ہیں۔

نیب کا مزید کہنا تھا کہ ان مشکوک ٹرانزیکشنز سے وصول ہونے والی رقم سے2005 سے 2016 کے درمیان 14 کمپنیاں بنائیں گئیں، ان کمپنیوں سے شریف خاندان نے بھاری مالی فوائد بھی حاصل کیے، حمزہ شہباز ان کمپنیوں کے کروڑوں کے شیئرز کے مالک بھی ہیں۔

دوسری جانب حمزہ شہباز کی جانب سے منی لانڈرنگ کیس میں ضمانت کی درخواست پر 23 فروری کو لاہور ہائیکورٹ کا 2 رکنی بینچ سماعت کرے گا۔

  • یہ ڈرامے اب بند ہو جانے چاہیں ، آخر میں ان سب نے با عزت بری ہو جانا ہے اور اگر طاقتور ادارے مریم اور اسکے حواریوں کو الگ کر دیتے ہیں تو یہ بات لکھ لیں کے
    پاکستان کا اقتدار جلد یابہ دیر شہباز شریف کے
    حوالے کر دیا جائے گا، یہ ملک نہ قابل ٹھیک ہو چکا ہے


  • Featured Content⭐


    24 گھنٹوں کے دوران 🔥


    From Our Blogs in last 24 hours 🔥


    >