ہنزہ میں بننے والی گلیشیائی جھیل پھٹنے کا خدشہ، ریڈالرٹ جاری


ہنزہ میں بننے والی گلیشیائی جھیل پھٹنے کا خدشہ

ہنزہ کے علاقے حسن آباد میں بننے والی گلیشیائی جھیل کے کسی بھی وقت پھٹ سکتی ہے,محکمہ موسمیات نے خدشہ ظاہر کرتے ہوئے الرٹ جاری کردیا۔

محکمہ موسمیات کے الرٹ میں کہا گیا کہ ششپر گلیشیئر کے سرکنے اور پانی کا بہاؤ رکنے سے حسن آباد ہنزہ میں بننے والی جھیل کے پھٹنے کا خدشہ ہے

الرٹ کے مطابق گلیشیائی جھیل رواں برس موسم گرما میں درجہ حرارت میں اضافہ کے ساتھ پھٹنے کا امکان ہے، اس حوالے سے آئندہ 3 سے 4 ہفتے بہت اہم ہیں، جھیل کی مسلسل نگرانی ضروری ہے تاکہ کسی ناگہانی صورتحال سے متعلق آگاہ رہا جائے۔

محکمہ موسمیات نے گلاف الرٹ میں سفارش کی کہ حسن آباد ہنزہ میں آٹومیٹک ویدر اسٹیشن نصب کیا جائے۔ گلاف پراجیکٹ 2 کے ذریعے تجویز کردہ ہائیڈرو میٹیریالوجیکل آلات کی آمد تک ششپر گلیشیئر پر واٹر لیول اور واٹر ڈسچارچ مانیٹرنگ اسٹیشن نصب کیا جائے۔

اس کے علاوہ گلیشیائی جھیل سے پانی کے اخراج کو یقینی بنانے کے لئے فوری اقدامات بھی کئے جائیں جس کے لئے ہائیڈرالک سائفن تیکنیک استعمال کی جائے تاکہ پانی کے اخراج کے ذریعے ممکنہ خطرے کو کم سے کم کیا جاسکے۔

محکمہ موسمیات کے مطابق محکمہ موسمیات کی ٹیکنیکل ٹیم مارچ کے پہلے ہفتے میں ہنزہ جائے گی، جو جھیل پر آٹو میٹک ویدر اسٹیشن نصب کرے گی، محکمہ موسمیات نے گلگت بلتستان ڈیزاسٹر منیجمنٹ اتھارٹی کو واٹر لیول گیج فراہم کرنے کی درخواست کردی ۔

دو سال قبل بھی ہنزہ کے علاقے حسن آباد میں گلیشئرسرکنے سے پیدا شدہ صورتحال کی وجہ سے حسن آباد کے درجنوں رہائشی مکانات ، زیر کاشت زمینیں ، بجلی گھر سمیت بجلی کا زیر تعمیر منصوبہ شدید خطرے سے دوچار ہوگئے تھے ۔ جبکہ جھیل کی سطح میں مسلسل اضافے سے دریائے ہنزہ اور دریائے گلگت کے قریب کی آباددیوں اور نشیبی علاقوں کو بھی خطرات لا حق ہوگئے تھے۔


Featured Content⭐


24 گھنٹوں کے دوران 🔥


From Our Blogs in last 24 hours 🔥


>