سینیٹ انتخابات کیسے ہونگے ؟سپریم کورٹ کی رائے آ گئی،الیکشن کمیشن کو ہدایت جاری

سینیٹ انتخابات سے متعلق دائر کردہ صدارتی ریفرنس پر سپریم کورٹ کی جانب سے رائے دے دی گئی، جس میں عدالت نے کہا ہے کہ سینیٹ الیکشن آئین کے مطابق ہوں گے۔

سپریم کورٹ نے یہ رائے ایک چار سے دی ہے جس میں جسٹس یحییٰ آفریدی نے اختلاف کیا ہے۔عدالت نے اپنی رائے میں کہا ہے کہ سینیٹ انتخابات اوپن بیلٹ سے نہیں کروائے جا سکتے لہٰذا سینیٹ انتخابات آئین کے تحت ہوں گے۔

یاد رہے کہ اس صدارتی ریفرنس پر چیف جسٹس کی سربراہی میں بنچ نے 25 فروری کو رائے محفوظ کی تھی، اس رائے کو آج چیف جسٹس گلزار احمد کی سربراہی میں 5 رکنی لارجر بنچ کی جانب سے جاری کر دیا گیا ہے۔

حکومت کی جانب سے سینیٹ الیکشن اوپن بیلٹ سے کرانے کے لیے صدارتی ریفرنس دائر کیا گیا تھا۔ جس پر اب عدالت نے کہا ہے کہ الیکشن کمیشن انتخابات کیلئے تمام اقدامات کرے اور سینیٹ انتخابات میں آئین کو مدنظر رکھتے ہوئے انتخابات کا انعقاد کیا جائے۔

سپریم کورٹ کے 5 رکنی لارجر بنچ کی جانب سے جاری کردہ رائے سے متعلق یہ بھی کہا گیا ہے کہ فی الحال مختصر فیصلہ جاری کیا جا رہا ہے جس کی تفصیلات بعد میں جاری کی جائیں گی۔

صدارتی ریفرنس پر جاری کردہ فیصلے میں یہ بھی کہا گیا ہے کہ الیکشن کمیشن شفاف انتخابات کے لیے اقدامات کر سکتا ہے، انتخابی عمل سے کرپشن ختم کرنا الیکشن کمیشن کی ذمہ داری ہے اور ادارے الیکشن کمیشن کے ساتھ تعاون کے پابند ہیں۔

سپریم کورٹ اپنی رائے میں یہ بھی کہا ہے کہ الیکشن کمیشن کرپشن کے خاتمے کے لیے ٹیکنالوجی کا بھی استعمال کر سکتا ہے۔ اس کے پاس اختیار ہے کہ وہ کرپٹ پریکٹس کے خلاف کارروائی کرے اور اس پریکٹس کو ختم کرنے کے لیے ایگزیکٹو اتھارٹیز الیکشن کمیشن سے تعاون کی پابند ہیں، الیکشن کمیشن 218/3 کے تحت کرپشن روکنے کے تمام اقدامات کرے۔

یاد رہے کہ الیکشن کمیشن کی جانب سے سینیٹ انتخابات کے لیے انتظامات کر لیے گئے ہیں اور ملک میں3 مارچ پروز بدھ کو سینیٹ الیکشن کیلئے ووٹنگ ہو گئی جس میں ارکان صبح9 بجے سے شام 5 بجے تک ووٹ ڈال سکیں گے۔

  • Govt should have attacked the opposition point of view that every member of parliament provincial or national has the right to differentiate to choose a candidate

    Govt contention that he has the right but this should be open that if one party member wants to show dissent he should do it openly
    Because expression of dissent in secrecy is the biggest source of corruption

  • as expected these fucker judges don’t have spine to stand up against corrupt mafia like zardari and Shareef

    These must have some kind of their personal videos leaked to the mafias

    • They can’t go beyond the constitution but SC defined in its judgment that secrecy is Not Absolute or for ever which is opposite to the view of Mafia and EC. Meaning Vote must be tractable.

      The mechanism and other details would be mentioned in detailed judgment.

  • Imran khan should go back to his pre-election mode, make sure PTI win their deserving senate seats to get majority in both houses to be able to get these laws passed . Please don’t leave these senate elections to Ch. Sarwer, buzdar, pevrez khatak etc

  • Judges ko aik line mein jawab dena chahiay tha. k jis k jitne vote hein aur jitni seats banti hein agar wo unhein na milli to votes dekhne ho gay aur jis ne party k burkhilaaf votes diay,, unhein floor crossing ke saza b deseat ker k dobara election kerwane chahiay.. Kiu k pakistan mein na to ikhlaqiyaat naam ke koi cheaz hai aur na zameer ke,, so yaha sirf aur sirf pesa chalta hai,, ya next election k liay party ticket,,

  • PTI must order all their members to take a photo of the vote when cast to prove who they voted for.

    This way if someone refuses to do it then he obviously sold out and voted for the opposition so should be thrown out of party.

  • SC righty, stick a big bamboo under Bongi khan ‘s rear end with this decision. The shameless idiot , brother of Faroog Naseem and the nephew of Sharif ud din Pirzada , AGP , is beating the drums of Government’s winning stance. This idiot doesn’t know that SC stayed away from exploiting the Role and violating the Constitution. Bongi khan has a way to amen the Constitution and bring in the legislation in the parliament to approve it. But for the , he has to over come his narcist nature and talk to the opposition members. This idiot is far from the capability of being graceful and act as a guardienne and protector of the people of Pakistan and to do whatever is necessary to achieve that. Its a loss for the inept bunch of Buffoons’ sitting in Treasury benches.


  • Featured Content⭐


    24 گھنٹوں کے دوران 🔥


    From Our Blogs in last 24 hours 🔥


    >