سپریم کورٹ کے سینیٹ انتخابات سے متعلق فیصلے سے عمران خان کی جیت؟سینئر صحافیوں کی رائے

سپریم کورٹ کے معاملات اور فیصلوں پر عبور رکھنے والے سینئر صحافیوں کا سینیٹ الیکشن سے متعلق صدارتی ریفرنس پر آنے والے سپریم کورٹ کے فیصلے سے متعلق کہنا ہے کہ اس فیصلے سے عمران خان کے مؤقف کی ہی جیت ہوئی ہے۔

سپریم کورٹ کا فیصلہ سننے کے بعد احاطے میں موجود صحافی عدیل وڑائچ، صدیق جان اور عمران وسیم کا کہنا تھا کہ اس فیصلے سے یہ بات واضح ہو گئی ہے کہ عدالت نے سینیٹ الیکشن میں ہونے والی اس کرپشن سے متعلق حکومت کے موقف کو تسلیم کیا ہے۔

صدیق جان نے بتایا کہ اس فیصلے میں عدالت نے کہا ہے کہ سینیٹ الیکشن آئین اور قانون کے مطابق ہوں گے، انہوں نے کہا کہ آئین میں یہ درج ہے کہ جتنے بھی الیکشن ہوں گے ان میں سیکریسی کو ملحوظ خاطر رکھا جائے گا جبکہ قانون میں اس کی تشریح مختلف ہے۔

انہوں نے بتایا کہ عدالتی کارروائی میں یہ بات بھی سامنے آئی ہے کہ کرپٹ پریکٹس کو ختم کرنے کے لیے الیکشن کمیشن کو حکم دیا گیا ہے کہ وہ ٹیکنالوجی کا استعمال کرے اس مقصد کے لیے الیکشن کمیشن سیریل نمبر اور بار کوڈ جیسی تکنیک استعمال کر سکتا ہے۔

عمران وسیم نے بتایا کہ عدالت نے واضح کیا ہے کہ سینیٹ انتخابات میں دیا جانے والا ووٹ ہمیشہ کے لیے خفیہ نہیں رہ سکتا اسے ضرورت پڑنے کی صورت میں دیکھا جا سکتا ہے اور یہی حکومت کا موقف تھا کیونکہ حکومت بھی یہی چاہتی تھی کہ ووٹ کے ہمیشہ خفیہ رہنے کے معاملے پر قانون سازی ہو یا اس پر عدالت اپنی رائے دے۔

عدیل وڑائچ نے بتایا کہ اس فیصلے میں ایک چار کی نسبت سے رائے آئی ہے اور جسٹس یحییٰ آفریدی نے فیصلے سے اختلاف کیا ہے تاہم جب تحریری فیصلہ سامنے آئے تو پتہ چلے گا کہ انہوں نے کس بات سے اختلاف کیا ہے کیا انہوں نے فیصلے سے مجموعی طور پر اختلاف کیا ہے یا پھر انہوں نے کسی ایک نقطے پر اعتراض اٹھایا ہے۔

  • بوٹ پالشیے یوتھیے سالے۔ کھوتے دے پتر۔ اگر کل کو کوئی عدالت لعنتی خبطان پر ٹیریان نیازی کو ناجائز ابا ہونے کے جرم میں نااہل بھی قرار دیتی ہے تب بھی یہ اسے لعنتی خبطان کی جیت ہی قرار دیں گے۔


  • Featured Content⭐


    24 گھنٹوں کے دوران 🔥


    From Our Blogs in last 24 hours 🔥


    >