پی ٹی آئی نے اپنے ارکان سندھ اسمبلی کو ایک ہوٹل سے دوسرے ہوٹل کیوں منتقل کیا؟

پی ٹی آئی نے بکنے کے اندیشے سے اپنے ارکان ایک ہوٹل سے دوسرے ہوٹل منتقل کر دیے

پاکستان تحریک انصاف نے ممکنہ سینیٹ انتخابات میں ممکنہ ہارس ٹریڈنگ روکنے کے لیے حکمت عملی کے تحت اپنے اراکین اسمبلی کو ایک ہوٹل سے دوسرے ہوٹل میں منتقل کر دیا ہے، جس کا مقصد اپنا ووٹ بینک محفوظ بنانا ہے۔

پی ٹی آئی نے گزشتہ روز کراچی کے ایک نجی ہوٹل میں اپنے اراکین اسمبلی کے لئے بکنگ کروائی تھی اور اسی ہوٹل میں دوسری جماعتوں کے ارکان بھی قیام کرنے کے لیے پہنچے تھے جس پر کچھ ارکان اسمبلی نے اعتراض اٹھایا تھا اور ہوٹل میں قیام کرنے کے بجائے گھر واپس چلے گئے تھے۔

بعد ازاں ارکان اسمبلی کے اعتراض کو مد نظر رکھتے ہوئے اپنے ارکان اسمبلی کو دوسرے ہوٹل میں منتقل کر دیا ہے، جہاں سے ارکان گزشتہ صبح اپنا ووٹ کاسٹ کرنے کے لیے اسمبلی پہنچیں گے۔

خبر رساں ادارے کے مطابق متحدہ قومی موومنٹ کے ارکان اپنی قیادت کے ساتھ شاہراہ فیصل کے ایک نجی ہوٹل میں موجود ہیں جہاں سے وہ اسمبلی میں ووٹ ڈالنے کے لیے پہنچیں گے۔

ایک ہوٹل سے دوسرے ہوٹل میں منتقل ہونے والے پی ٹی آئی ارکان کا کہنا تھا کہ لگتا ہے کہ ہم پر شک کیا جا رہا ہے لیکن ہم عمران خان کے سپاہی ہیں اور ہمیشہ رہیں گے، ہم لوگ پارٹی کی ہدایات کے مطابق اپنا ووٹ دیں گے لیکن ہم ہوٹل میں رہنے کی بجائے گھر میں رہنا چاہتے ہیں۔


Featured Content⭐


24 گھنٹوں کے دوران 🔥


From Our Blogs in last 24 hours 🔥


>