الیکشن کمیشن نے لیاقت جتوئی کے بیان کا نوٹس لے لیا

الیکشن کمیشن نے لیاقت جتوئی کے بیان کا نوٹس لے لیا

الیکشن کمیشن آف پاکستان نے بلوچستان سے تحریک انصاف کے رہنما لیاقت جتوئی کے بیان کا نوٹس لے لیا ہے، جس میں انہوں نے کہا تھا کہ سیف اللہ ابڑو نے سینٹ کے ٹکٹ کے لئے 35 کروڑ روپے کی ادائیگی کی ہے۔

تفصیلات کے مطابق الیکشن کمیشن آف پاکستان کی جانب سے پریس ریلیز جاری کی گئی ہے، جس میں الیکشن کمیشن نے لیاقت جتوئی کے بیان کا نوٹس لیتے ہوئے انہیں خط ارسال کرنے کا فیصلہ کیا ہے، جس کے جواب میں لیاقت جتوئی اپنے بیان کے حوالے سے کمیٹی کو دستاویزی ثبوت فراہم کریں گے تاکہ اس معاملے کو آگے بڑھایا جا سکے۔

الیکشن کمیشن نے لیاقت جتوئی کے بیان کا نوٹس لے لیا

الیکشن کمیشن کی پریس ریلیز کے مطابق الیکشن کمیشن سیکرٹریٹ میں سینیٹ انتخابات کے حوالے سے قائم کردہ ویجیلینس کمیٹی کا اجلاس منعقد ہوا، اجلاس کی سربراہی محمد ارشد، ڈائریکٹر جنرل (لاء) نے کی جس میں اسٹیٹ بینک آف پاکستان، نیب، نادرا اور ایف آئی اے کے نمائندوں نے شرکت کی جو کہ ویجیلینس کمیٹی کے ممبر ہیں۔

اجلاس میں اس بات کا جائزہ لیا گیا کہ سینیٹ انتخابات 2021 کو شفاف بنانے کے حوالے سے ایسے کون سے اقدامات کی ضرورت ہے جس سے یہ تاثر کا موثر انداز میں تدارک کیا جاسکے کہ انتخابات میں ووٹوں کی خریدوفروخت عمل میں آتی ہے۔

الیکشن کمیشن کے پریس ریلیز کے مطابق کمیٹی نے اس حوالے سے یہ فیصلہ کیے:

1- کمیٹی نے لیاقت جتوئی سابق رکن اسمبلی کی جانب سے جاری کردہ بیان کا نوٹس لے لیا، جس میں یہ کہا گیا کہ انتخابات میں سیف اللہ ابڑو کو مبینہ طور پر سینیٹ انتخابات کے لئے ٹکٹ 35 کروڑ کے عوض دیا گیا، کمیٹی نے فیصلہ کیا کہ لیاقت علی جتوئی کو اس حوالے سے خط ارسال کیا جائے کہ وہ کمیٹی کو اس حوالے سے دستاویزی ثبوت فراہم کرے تاکہ معاملات کو آگے بڑھایا جا سکے۔

2- کمیٹی نے فیصلہ کیا کہ عوام الناس کو اس کمیٹی کے حوالے سے مطلع کیا جائے تاکہ اگر کسی بھی فرد کے پاس سینیٹ انتخابات میں ووٹ دینے سے اجتناب کرنے کے عوض مالی یا کسی قسم کے فوائد حاصل کرنے کے حوالے سے کوئی معلومات، مصدقہ ثبوت کے ساتھ موجود ہیں تو وہ کمیٹی کو مطلع کر سکے۔

  • Why is election commission only taking notice of statements against PTI. Why does it not take notice of illegal and corrupt activities of other parties involved in horse trading for Senate elections.


  • Featured Content⭐


    24 گھنٹوں کے دوران 🔥


    From Our Blogs in last 24 hours 🔥


    >