سینٹ انتخابات:سندھ میں کس کس نے حکومت اور اتحادی جماعتوں کو دھوکا دیا؟

 

سندھ میں کس کس نے حکومت اور اتحادی جماعتوں کو دھوکا دیا؟ باز پُرس کا سلسلہ شروع

سینیٹ الیکشن 2021 کیلئے سندھ سے سامنے آنے والے انتخابی نتائج نے تحریک انصاف اور گرینڈ ڈیموکریٹک الائنس کی قیادت کو چکرا کر رکھ دیا ہے کیونکہ ان کے ارکان میں سے 6 نے پیپلزپارٹی کو ووٹ دیئے ہیں جس کیلئے اب تحقیقات کا سلسلہ شروع ہو چکا ہے۔

تفصیلات کے مطابق پیپلز پارٹی کو اپنے ارکان کے ووٹوں سے جنرل نشست پر 6 جبکہ خواتین اور ٹیکنوکریٹ کی نشست پر 7 ووٹ زائد ملے جس پر اپوزیشن کی اتحادی جماعتوں کو تشویش ہے۔ تینوں اتحادی جماعتوں کی الیکشن حکمت عملی کے تحت جی ڈی اے کے امیدوار سید صدرالدین شاہ راشدی کو 21 ووٹ ملنے تھے۔

جی ڈی اے کے 14 ارکان کے علاوہ پی ٹی آئی کے 7 ارکان اسمبلی نے سید صدر الدین شاہ راشدی کو ووٹ دینا تھا تاہم انہیں صرف 15 ووٹ ہی مل سکے۔ صورتحال واضح ہونے کے بعد جی ڈی اے اور پی ٹی آئی نے اس حوالے سے گزشتہ روز سے علیحدہ علیحدہ اجلاس بھی طلب کر رکھے ہیں۔

جی ڈی اے کے سندھ اسمبلی میں پارلیمانی لیڈر بیرسٹر حسنین مرزا نے اس حوالے سے خبر رساں ادارے سے گفتگو کرتے ہوئے کہا ہے کہ شفاف الیکشن کرانا الیکشن کمیشن کی ذمہ داری تھی، حزب اختلاف کے 6 ووٹ حکومتی امیدواروں کو ملنا الیکشن کی شفافیت پر سوالیہ نشان ہے۔ ہمیں سینیٹ کے نتائج کے حوالے سے سخت تشویش ہے۔

سندھ اسمبلی کے پارلیمانی لیڈر نے کہا کہ وفاداری بدلنے والے 6 ارکان نے نہ صرف جی ڈے اے بلکہ ایم کیو ایم اور پی ٹی آئی کو بھی دھوکہ دیا، ہم بہت جلد متحدہ اپوزیشن جماعتوں کا اجلاس بھی طلب کریں گے۔


  • Featured Content⭐


    24 گھنٹوں کے دوران 🔥


    From Our Blogs in last 24 hours 🔥


    >