ایم کیو ایم کا حکومت سے ڈپٹی چیئرمین شپ کا مطالبہ، پیپلزپارٹی کی آفر

ایم کیو ایم کا حکومت سے ڈپٹی چیئرمین شپ کا مطالبہ، پیپلزپارٹی کی آفر

حکومت کی اتحادی جماعت متحدہ قومی موومنٹ پاکستان نے تحریک انصاف سے سینیٹ کی ڈپٹی چیئرمین شپ کا مطالبہ کردیا ہے، جبکہ اپوزیشن جماعت پیپلزپارٹی نے متحدہ کو اسی عہدے کی آفر بھی پیش کردی ہے۔

خبررساں ادارے کی رپورٹ کے مطابق گزشتہ روز ایم کیو ایم سربراہ خالد مقبول صدیقی کی سربراہی میں وزیراعظم عمران خان سے ملنے والے وفد نے حکومت سے مطالبہ کیا کہ چونکہ حکومت نے بطور اتحادی ایم کیو ایم کے مطالبات پورے نہیں کیے لہذا ڈپٹی چیئرمین شپ کا عہدہ ایم کیو ایم کو دیا جائے۔

ایم کیو ایم وفد نے وزیراعظم کے سامنے اپنے اعتراضات و تحفظات بھی وزیراعظم کے سامنے رکھے اور کہا کہ اگر حکومت صادق سنجرانی کو بطور چیئرمین سینیٹ کے امیدوار سامنےلاتی ہے تو ہمیں اس پر کوئی اعتراض نہیں ہے مگر حکومت کے ڈپٹی چیئرمین بھی اپنی پارٹی سے لائے جانے کی کوشش کی صورت میں ہم 12 مارچ کو فیصلہ کرنے کیلئے آزاد ہوں گے۔

خالد مقبول صدیقی نے کہا کہ وزیراعظم کا چیئرمین اور ڈپٹی چیئرمین سینیٹ کے امیدواروں کا اعلان کرنے کا طریقہ کار ٹھیک نہیں ہے ، ڈپٹی چیئرمین کے امیدوار کا اعلان کرنے کیلئے حکومت کو اتحادی جماعتوں سے مشاورت کرنی چاہیے۔

میڈیا رپورٹ میں انکشاف کیا گیا ہے کہ ایم کیو ایم کی جانب سے حکومت سے یہ مطالبہ سامنے آنے پر پیپلزپارٹی نے ایم کیو ایم کو اسی عہدے کی آفر دے کر حمایت حاصل کرنے کی کوشش کی ہے، تاہم پیپلزپارٹی کا یہ فیصلہ ابھی انفرادی ہے اس حوالے سے پیپلزپارٹی کی قیادت پی ڈی ایم کو بھی اعتماد میں لے گی۔

  • Govt should give deputy chairman Senate to MQM. That will be good for Karachi and for Urdu-Speaking community of Pakistan. Government should do whatever it takes to stop PPP from electing its Chairman Senate.


  • Featured Content⭐


    24 گھنٹوں کے دوران 🔥


    From Our Blogs in last 24 hours 🔥


    >