قومی اسمبلی کے اہم ترین اجلاس کی دن بھر کی کارروائی کی روداد

ہفتے کے روز قومی اسمبلی کا خصوصی اجلاس دن سوا 12 بجے شروع ہوا ، تلاوت کلام پاک، نعت رسول مقبول ﷺ کے بعد قومی ترانا پڑھا گیا۔

وزیراعظم کے اعتماد کے ووٹ کی قرار داد شاہ محمود قریشی نے پیش کی جس کے بعد اسپیکر اسد قیصر نے اراکین اسمبلی کو ووٹ ڈالنے کے طریقہ کار سے آگاہ کیا۔

تمام اراکین کی ایوان میں موجودگی کو یقینی بنانے کیلئے 5 منٹ تک گھنٹیاں بجائی گئیں اور اس کے بعد ایوان کے دروازے بند کرکے تمام اراکین کو لابی میں جانے کی ہدایات جاری کی گئیں۔

اس کے بعد قرار داد پر ووٹنگ کا سلسلہ شرو ع ہوا ، گنتی کے بعد اسپیکر نے نتیجے کا اعلان کیاجس کے بعد عمران خان پر 178 اراکین اسمبلی نے اعتماد کا اظہار کیا۔

وزیراعظم کی جیت کے بعد ایوان میں موجود اراکین نے جوش و خروش کا اظہارکیا اور ڈیسک بجائے، اس سے قبل 2018 میں عمران خان کو 176 ووٹ ملے تھے۔

ایک دلچسپ بات جوآج کے اجلاس میں سامنے آئی وہ یہ تھی کہ اجلاس شرو ع ہونے کے وقت اپوزیشن بینچوں پر محسن داوڑ اور مولانا اکبر چترالی موجود تھے، اپوزیشن کی نشستوں پر کرنسی نوٹ اور ہار موجود تھے جسے اسپیکر اسد قیصر نے حکم دے کر ہٹوادیا تھا۔


Featured Content⭐


24 گھنٹوں کے دوران 🔥


From Our Blogs in last 24 hours 🔥


>