شیخوپورہ کے چار یتیم بھائیوں کی کہانی پر ہرآنکھ نم

شیخوپورہ کے چار یتیم بھائیوں کی کہانی پر ہرآنکھ نم

ماں باپ کا سایہ سر پر نہ ہو تو زندگی میں در در کی ٹھوکریں کھانا پڑ جاتی ہیں، شیخوپورہ کے چار یتیم بچوں کی کہانی سامنے آنے پر دل خون کے آنسو رو رہاہے۔

یہ کہانی ہے فیضان، عثمان ، نعمان اور راشد کی جن کے ماں باپ دنیا سےچلے گئے اور چاروں بھائی مل کر زندگی کا پہیہ چلارہے ہیں، یتیم بچے عثمان نے اپنی درد بھری کہانی انتہائی صبر شکر سے سنا کر سب کے دل افسردہ کردیئے،عثمان کی ویڈیو وائرل ہوگئی۔

نویں جماعت کے طالبعلم عثمان نے بتایا کہ آج پورا دن روزگار ڈھونڈتا رہا لیکن اٹھارہ سال سے کم عمر کا ہونے کی وجہ سے روزگار نہیں ملتا، پرکوشش کرتا رہوں گا۔

یتیم بچے نے بتایا کہ کھانا مل جائے تو ٹھیک ورنہ پاس ہی دستر خوان ہے وہاں سے کھالیتے ہیں،وہاں فری کھانا ملتا ہے تو کبھی کبھی کھالیتے ہیں، کوئی بڑا ہو یا چھوٹا سب کو فری کھانا دیتے ہیں، یا خود کھانا پکا لیتا ہوں۔

ویڈیو سامنے آنے پر پاکستان بیت المال کے ایم ڈی عون عباس بپی نے ٹویٹ کر کے بتایا "پاکستان بیت المال کی ٹیم بچوں کے گھر پہنچ چکی ہے۔مالی امداد کا کیس تیار کرلیا گیا ہے۔ بچوں کی تعلیم کے لئے بھی ہماری طرف سے پیشکش کی گئی تھی جو اُنکے چچا نے منع کردیا”۔

 

  • نا جانے کتنے پھول اسطرح در بدر ہو رہیں ہوں گے۔ یہ تو وہ ہیں جو کسی وجہ سے سامنے آگئے۔ بہت با ہمت اور حوصلہ مند نوجوان ہے ۔


  • Featured Content⭐


    24 گھنٹوں کے دوران 🔥


    From Our Blogs in last 24 hours 🔥


    >